کے ایم سی سے 7 ہزار بوگس ملازمین برطرف

December 17, 2015 4:23 pm0 commentsViews: 26

واٹر بورڈ اور کے ایم سی ملازمین کی بائیو میٹرک کروائی گئی‘ مرحلہ وار سندھ بھر تک کردیا جائے گا
لاڑکانہ( مانیٹرنگ ڈیسک) سیکرٹری بلدیات اور ہائوسنگ اور پلاننگ سندھ عمران عطا سومرو نے کہا ہے کہ کراچی میونسپل کارپوریشن سے7 ہزار جعلی ملازمین کو برطرف کیا گیا ہے جبکہ لاڑکانہ میں گریڈ ایک تا 5 تک کے 275، کندھ کوٹ میں22 ملازمین جعلی ثابت ہوئے ہیں جن کے ریکارڈ کی تصدیق نہ ہوسکی ہے اور ان کے خلاف کاروائی کے لیے لکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 56 ٹی اوز کو رکارڈ پیش نہ کرنے پر معطل کیا گیا تھا جن میں سے ریکارڈ تصدیق کروانے پر22 ٹی اوز کو بحال کیا گیا ہے اور دیگر ابھی تک معطل ہیں، محکمے میں جعلی بھرتیوں کے خلاف نیب، اینٹی کرپشن اور ہمارے محکمے کی جانب سے کارروائی کرنے کے ساتھ ساتھ جعلی ملازمین کی جانب سے وصول کی گئی تنخواہیں واپس کروائیں گے۔ لاڑکانہ پریس کلب میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ محکمہ بلدیات کے سارے ملازمین کی تصدیق کے لیے بائیو میٹرک تصدیق کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت کراچی واٹر بورڈ میں ملازمین کی بائیو میٹرک کروائی گئی ہے اور اب کے ایم سی ملازمین کے بعد یہ مرحلہ سارے سندھ تک وسیع کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کی یونین کونسل کو پہلے ماہوار2,2 لاکھ روپے دیئے جاتے تھے۔