شاہ فیصل کالونی میں بینک میں آتشزدگی

December 17, 2015 4:46 pm0 commentsViews: 26

کراچی(کرائم رپورٹر)شاہ فیصل کالونی میں واقع بینک کے جنریٹر میں آگ لگ گئی ۔تفصیلات کے مطابق شاہ فیصل کالونی نمبر 2میں واقع اسٹینڈرڈ چارٹرڈ بینک میں آگ کی اطلاع پر فائر بریگیڈ کی2گاڑیاں موقع پر پہنچ گئیں اور آدھے گھنٹے کی جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پالیا ۔ترجمان نے بتایا کہ آگ بینک کے باہر نصب الیکٹرک جنریٹر میں لگی تھی جس کی وجہ سے بینک کو بجلی فراہم کرنے کا متبادل انتظام تباہ ہو گیا جبکہ آگ لگنے کی وجہ شارٹ سرکٹ معلوم ہوتی ہے ۔

بھینس کالونی میں، خوفناک آتشزدگی، درجنوں دکانوں میں کروڑوں کا سامان خاکستر
چٹائی اور بانسوں کی مارکیٹ میں ایک دکان میں آگ بھڑک اٹھی جس نے اطراف کی دکانوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ،دکاندار کو کروڑوں کا نقصان
28فائر ٹینڈراور 3باوزرنے 3گھنٹے کی سخت جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پایا آگ کے شعلوں سے علاقے میں سخت خوف و ہراس
کراچی(کرائم رپورٹر)بھینس کالونی میں قائم لکڑی کے بانسوں اور چٹائی کی دکانوں میں خوفناک آگ لگنے سے درجنوں دکانوں میں موجود کروڑوں روپے مالیت کی لکڑی ،بانس اور چٹائی جل گئی ،تیز ہوا کے باعث آگ نے شدت اختیار کی اور ایک دکان کی آگ نے پوری مارکیٹ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا،فائر بریگیڈ حکام نے صورتحال کو دیکھتے ہو ئے تیسرا درجہ قرار دیتے ہو ئے شہر بھر کی فائر ٹینڈر طلب کرلی۔ 28فائر ٹینڈر 3باوزر نے 3گھنٹے کی سخت جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پالیا ۔دوسری جانب ملیر اور نیشنل ہائی وے پر بدترین ٹریفک جام کی وجہ سے متعدد گاڑیاں تاخیر سے پہنچیں۔ تفصیلات کے مطابق سکھن کے علاقے بھینس کالونی موڑ پر موجودبانس اور چٹائی کی مارکیٹ میں قائم ایک دکان میں بدھ کی شام ساڑھے 4بجے اچانک آگ بھڑک اٹھی جس کی اطلاع ملتے ہی اطراف کی دکانوں کے مالکان اور دیگر افراد موقع پر جمع ہو گئے اور آگ پر قابو پانے کی کوشش شروع کردی تاہم چند منٹوں کے دوران ہی صورتحال قابو سے باہر ہو گئی جس کی اطلاع فائر بریگیڈ کو دی گئی ،واقعے کی اطلاع ملتے ہی کورنگی لانڈھی اور دیگر فائر اسٹیشن سے گاڑیاں روانہ کردی گئیں اور 4گاڑیوں نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پانا شروع کردیا دوسری جانب آگ کی شدت کو دیکھتے ہو ئے اطراف کی دکانوں کے مالکان اپنا سامان جلنے کے خدشے کے پیش نظر محفوظ مقام پر منتقل کرنے لگے تاہم آگ کی شدت کو دیکھتے ہو ئے پولیس نے موقع پر پہنچ کر پورے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور تمام افراد کو جلنے والی والی دکان سے دور کردیا ۔نقصان کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ کولنگ کے عمل کے بعد ہی حتمی رپورٹ مرتب کی جاتی ہے تاہم ابتدائی رپورٹ کے مطابق مارکیٹ میں موجود ایک درجن سے زائد دکانیں اور ان میں رکھی ہو ئی کروڑوں روپے مالیت کی لکڑی ،بانس ،چٹائی اور دیگر سامان جل کر تباہ ہو گیا ۔آگ لگنے کی وجوہات کا علم نہیں ہو سکا ہے۔دوسری جانب ملیر ،ڈرگ روڈ اور نیشنل ہائی وے پر ٹریفک جام کی وجہ سے متعدد فائر ٹینڈر تاخیر سے موقع پر پہنچے اور آگ پر بروقت قابو پانے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔