عمران فاروق کو قتل کرنے کے بعد پاکستان میں اہم شخصیات کو آگاہ کیا، ملزمان کا انکشاف

January 1, 2016 3:12 pm0 commentsViews: 22

مرڈرآپریشن کی کامیابی کی اطلاع لندن میںبھی دی گئی تھی
قتل کرنے کے لیے چھری لندن کی مارکیٹ سے خریدی گئی تھی
ملزمان نے جے ٹی آئی کے سامنے سنسنی خیز اعترافات کیے ہیں
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کے ملزم نے جے آئی ٹی کے سامنے اعتراف کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ ڈاکٹر عمران فاروق کو قتل کرنے کیلئے ٹاسک دیا گیا تھا ڈاکٹر عمران فاروق زندہ نہیں بچنا چاہئے، مرڈر مشن کی کامیابی سے متعلق لندن اور پاکستان میں اہم شخصیات کو آگاہ بھی کیا۔ تفصیلات کے مطابق عمران فاروق قتل کیس کے مرکزی ملزم محسن علی سید نے جے آئی ٹی کے سامنے اعتراف کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ ڈاکٹر عمران فاروق کو قتل کرنے کیلئے چھری لندن کی مقامی مارکیٹ سے خریدی، انہیں اوپر سے ٹاسک ملا تھا کہ عمران فاروق زندہ نہیں بچنا چاہئے۔ ملزم محسن علی نے مزید انکشاف کیا کہ قتل کیلئے ڈاکٹر عمران فاروق کے گھر کے سامنے والی گلی کا انتخاب کیا جہاں سے وہ اکثر مارکیٹ جایا کرتے تھے۔ ڈاکٹر عمران فاروق جونہی گلی تک پہنچے تو اپنے ساتھی کاشف خان نے کامران کے ساتھ مل کر حملہ کر دیا۔ کاشف نے عمران فاروق کے سر پر اینٹوں سے وار کیا جس سے وہ بے ہوش ہوگئے اور اس دوران میں نے ان کے پیٹ میں چھری سے وار کئے۔ محسن کے مطابق تمام کارروائی 4 سے5 منٹ کے دوران کی گئی اور مشن کی کامیابی سے متعلق لندن اور پاکستان میں اہم شخصیات کو آگاہ کیا۔ جے آئی ٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم کا اعترافی بیان انتہائی اہمیت کا حامل ہے جسے رپورٹ اور ریکارڈ کا حصہ بنایا گیا ہے۔