دنیا بھر میں سائبر حملوں میں ریکارڈ اضافہ،30کروڑ طریقے آزمائے گئے

January 4, 2016 1:21 pm0 commentsViews: 30

امریکہ میں 2015 کے دوران سائبر حملے میں 56لاکھ ملازمین کے فنگر پرنٹس چوری اور لاکھوں ای میل کو ہیک کیا گیا
بے شمار دستاویزات افشا یا چوری ہوئیں، انفارمیشن ٹیکنالوجی کی انڈسٹری کو سائبر کرائم کیلئے مشترکہ حکمت عملی پر مجبور کردیا گیا
اسلام آباد( نیٹ نیوز) سال2015 کے دوران دنیا بھر میں سائبر حملوںمیں ریکارڈ اضافہ ہوا‘ دنیا کے مختلف ممالک میں انٹر نیٹ کی مختلف سائٹس پر سائبر کرائم کے30کروڑ طریقے آزمائے گئے جن سے17 کروڑ 50 لاکھ سے زائد دستاویزات چوری ہوئی‘کمپیوٹر ہیکنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کی انڈسٹری کو سائبر کرائم کیلئے مشترکہ حکمت عملی پر مجبور کردیا‘ صرف امریکہ میں2015 کے دوران سائبر حملے میں56 ملازمین کے فنگر پرنٹس چوری ہوئے جبکہ لاکھوں کی تعداد میں ایل میل کو ہیک کیا گیا‘ جس پر امریکی خفیہ ایجنسی ایف بی آئی کو سائبر وارننگ جاری کرنی پڑی‘ جبکہ دنیا بھر میں انٹرنیٹ بینکنگ کے لاکھوںکامیاب حملے اس کے علاوہ ہیں جن میں بیشمار دستاویزات افشا یا چوری ہوئیں‘ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ماہرین کو کچھ واقعات میں یوں لگا جیسے دنیا بھر کے کمپیوٹر نظاموں کوتحفظ فراہم کرنے کیلئے شاید کوئی خاطر خواہ انتظام ہو ہی نہیں سکتا‘ سال2015ء میں ہونیوالے ہیکنگ کے واقعات نے امریکہ سمیت پوری دنیاکو انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ماہرین کے مطابق کمپیوٹر سے ناواقفیت اور غیر تربیت یافتہ افرادکا انٹرنیٹ پر غیر متعلقہ سائٹس پر غیر ضروری کلک کرتے ہوئے غیر ضروری سائٹس پر جانا بھی غیر فطری طور پر متعلقہ سائٹ کو ہیک کرنے کے مترادف ہے۔