CPLC کے نااہل چیف کی تقرری سے جرائم میں اضافہ ہوگیا‘ عتیق میر

January 6, 2016 5:20 pm0 commentsViews: 23

تاجروں کو دھمکی آمیز کالیں ملنے کی شکایت میں اضافہ ہوگیا‘ سی پی ایل سی کی تباہی سے تاجر پریشان ہیں
سی پی ایل سی کے سربراہ کونہیں ہٹایا گیا تو تاجر احتجاجی ریلی اور گورنر ہائوس کے گھیرائو پر مجبور ہوجائیں گے
کراچی(اسٹاف رپورٹر) آل کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے کراچی میں ایک بار پھر جرائم کے بڑھتے ہوئے واقعات پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہر میں سرگرم ماہر اور منجھے ہوئے جرائم پیشہ عناصر کے خلاف تمام تکنیکی وسائل بروئے کار لانے کی ضرورت ہے، بھتے کیلئے سیلولر فون سے دی جانے والی دھمکیوں کی شکایات میں اضافہ ہورہا ہے، CPLCجیسے اہم اور تکنیکی وسائل سے آراستہ ادارے کی تباہی سے تاجر پریشان اور مجرم سرگرم ہوگئے ہیں،CPLCمیں نااہل چیف کی تقرری جرائم پیشہ عناصر کیلئے حوصلہ افزائی کا باعث ہے، فوری تبدیل نہ کیا گیا تو احتجاجی ریلی اور گورنر ہائوس پر دھرنا دینے پر مجبور ہوجائینگے، آج سپریم کونسل کے ایک اہم اجلاس میں انھوں نے تاجروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دھوکہ دہی کے الزام میں ملک سے مفرور امریکی شہری زبیر حبیب کو بعض نادیدہ قوتوں کی سفارش پر CPLCکا سربراہ بناکر واپس لایا گیا ہے، بدعنوان شخص کو بدعنوانی کی روک تھام کے ادارے کا چیف بناکر عوام سے بھونڈہ مذاق کیا گیا ہے اجلاس میں شریک تاجر نمائندگان اکرم رانا، انصار بیگ قادری، طارق ممتاز، زبیر علی خان، عبدالغنی اخوند، احمد شمسی، شیخ محمد عالم، سید حکیم شاہ، سید شرافت علی، عرفان للہ، امان اللہ شاہ، الطاف لالہ، میر عبدالحئی خان،محمد آصف ، دلشاد بخاری، عبدالقادر، اور دیگر نے CPLC کے نئے چیف زبیر حبیب کو فوری طور پر عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ CPLCمیں بددیانت اور نااہل سربراہ کا تقرر کراچی کے امن کیلئے خطرہ ہے۔