اثاثہ جات ریفرنس:اہم شواہد گم ہونے کے باعث زرداری کے بری ہونے کا امکان

January 7, 2016 4:25 pm0 commentsViews: 23

تفتیشی دستاویز کے 300سے زاہد اہم صفحات غائب ہوگئے
صفحات نیب افسران کی تفتیش اور گواہوں کے بیانات پر مشتمل تھے
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سابق صدرآصف علی زرداری کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس میں بھی اہم شواہد گم ہوگئے۔ تفتیشی دستاویز کے 300 سے زائد اہم صفحات غائب ہونے سے سابق صدر کے ایک اور ریفرنس میں بھی باعزت بری ہونے کے امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق سابق صدر آصف زرداری کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس کی فائل نمبر 4 سے 332 سے 642 تک 300 صفحات غائب ہوچکے ہیں۔ یہ صفحات نیب کے تفتیشی افسر کی رپورٹ اور گواہوں کے بیانات پر مشتمل تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عدالتی عملہ تلاش میں مصروف ہے لیکن اہم صفحات کے گم ہونے سے مقدمے سے آصف زرداری کی بریت کے قوی امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔ اہم شواہد غائب ہونے کی وجہ سے ریفرنس میں اہم خاتون گواہ مدینہ کا بیان بھی ابھی تک ریکارڈ نہیں کیا جاسکا۔ مدینہ منورہ بی بی عدالت میں پیش ہوئیں مگر ان سے متعلق دستاویز پیش نہیں کی گئیں۔ عدالت نے ریفرنس کا مکمل ریکارڈ طلب کرلیا۔ قبل ازیں ریفرنس میں عدالتی ریکارڈ سے 300 صفحات غائب ہونے پر جسٹس خالد رانجھا نے شدید برہمی کااظہار کیا اور حکم دیا کہ تمام گم شدہ ریکارڈ منظر عام پر لایاجائے جس کے بعد عدالتی عملے نے ریکارڈ کی 2 گھنٹے چھان بین کی اور عدالت میں کاغذات کے ڈھیر لگادیے۔ عدالتی عملے کی پھرتیوں کے بعد بھی جب گم شدہ صفحات نہ ملے تو جسٹس رانجھا نے سماعت آج تک ملتوی کرتے ہوئے حکم دیا کہ ہر صورت گم شدہ ریکارڈ کل تک عدالت کے روبروپیش کیاجائے بصورت دیگر عدالتی عملے کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائے گی۔