پاک بحریہ کا قزاقوں کیخلاف آپریشن کا عملی مظاہرہ

January 7, 2016 5:21 pm0 commentsViews: 23

جہازوں پر قبضہ کرنے والے قزاقوں کے چلتے ہوئے جہاز پر ہیلی کاپٹر اتار کر کمانڈو ایکشن
فائرنگ کے تبادلے کے بعد ملزمان کی گرفتاری اور سرینڈر کرتے ہوئے دکھایا گیا
کراچی(اسٹاف رپورٹر)کسی مسافر بردار جہاز پر بحری قذاقوں کے فرضی قبضے کو کس طرح ختم کیا جاتا ہے ؟اگر جنگی بحری جہاز کے قریب کسی اطلاع کے بغیر کسی دوسرے ملک کا جہاز یا اسپیڈ بوٹ آجائے تو اس صورتحال سے کس طرح نمٹا جاتا ہے ؟یا کسی ہنگامی صورتحال میں ہیلی کاپٹر کو چلتے جہاز کے عرشے پر اتارنا مقصد ہو تو کیا حکمت عملی ہوتی ہے ؟ ان سب سوالات کا جواب میڈیا کو گزشتہ روز بحیرہ عرب میں پی این ایس شمشیر پر پاکستان بحریہ کے افسران اور جوانوں نے نہ صرف تفصیل کے ساتھ دیئے بلکہ فرضی مظاہرہ کرکے بھی دکھایا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد اور کراچی کے سینئر صحافیوں کو پاکستان بحریہ کی جانب سے جاری مطالعاتی دورے کے دوسرے روز پی این ایس شمشیر کے ذریعے کھلے سمندر میں لے جایا گیا۔اس دوران تین قسم کے بحرانوں سے نمٹنے کے عملے مظاہرے کیے گئے ۔اس فرضی مشن کے دوران کچھ قذاقوں نے پہلے جہاز پر قبضہ کیا پھر پاکستان نیوی کے حکام نے انہیں ہتھیار پھینک کر خود کو کمانڈوز کے حوالے کرنے کی وارننگ دی تاہم وارننگ پر عمل نہ کرنے پر جہاز کی پشت سے اسپیڈ بوٹ اور ہیلی کاپٹر کے ذریعے ایس ایس جی کمانڈوز نے جہاز کے عرشے سے داخل ہوکر کیپٹن کے کیبن یا وارڈ روم میں موجود قذاقوں کو گرفتار کیا۔چلتے بحری جہاز پر ہیلی کاپٹر سے رسے کے ذریعے اترنے کا متاثر کن مظاہرہ دیکھتے ہی صحافی تمام کمانڈوز اور عرشے پر موجود عملے کی تربیت پر انہیں شاباش دیتے رہے ۔