10کروڑ روپے سے زائد ہنڈی حوالے کا مقدمہ درج

January 9, 2016 1:55 pm0 commentsViews: 23

رقم شمالی وزیرستان اور مہمند ایجنسی کے2 رہائشیوں کے نام پر بینکوں میں منتقل کی گئی، دہشت گردی کیلئے استعمال ہونے کا خدشہ ہے
دونوں افراد کے بینکوں کے اکائونٹس میں ایک سال میں2 ارب16 کروڑ کی ٹرانزکیشن ہوئی ہے، ذرائع کا انکشاف
کرچی( نیوز ڈیسک) فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی، کمرشل بینک سرکل کراچی نے10 کروڑ روپے سے زائد ہنڈی حوالہ کا مقدمہ درج کرلیا مذکورہ رقم دہشت گردی میں استعمال ہونے کے خدشات بھی ہیں کیونکہ حوالہ کی رقم شمالی وزیرستان اور مہمند ایجنسی کے دو رہائشیوں کے نام پر بینکوں میں منتقل کی گئی۔ تفتیش کے دوران یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ اب دونوں افراد کے اکائونٹس میں ایک سال کے دوران2 ارب 16 کروڑ روپے کی ٹرانزیکشن ہوئی۔ ایف آئی آر نمبر 2016/2 میں تفتیشی افسر سب انسپکٹر منصور مہمند نے انکشاف کیا ہے کہ کلفٹن میں واقع مشہور ڈیپارٹمنٹل اسٹور میں قائم مارس ایکسچینج جس کو لائسنس بی کیٹیگری کا اسٹیٹ بینک نے جاری کیا تھا اور جو کہ رقوم کی ترسیل کی مجاز نہیں تھی اس نے 2012ء میں25 ٹرانزکشن کے ذریعے10 کروڑ47 لاکھ 50ہزار روپے حوالے کے ذریعے چین بھجوائے۔ ایف آئی آر میں مزید بتایا گیا ہے کہ پاکستان میں کام کرنے والی ایک چینی کمپنی نے مارس ایکسچینج نامی کمپنی سے رابطہ کیا کہ کمپنی کو چین رقم منتقل کرنی ہے جس پر مارس ایکسچینج جو مجاز ہی نہیں تھا اس کے ڈائریکٹرز نور اللہ جان اور آفتاب احمد نے رقم بھجوانے کی حامی بھری جس پر چینی کمپنی نے مندرجہ بالا رقم کے چیک ان کے حوالے کر دئیے۔ مذکورہ رقم چینی کمپنی نے اپنے ملک میں وصول کر لئے۔