چند بھٹکے نوجوانوںکی وجہ سے پاکستان پر انگلی اٹھ رہی ہے، وزیراعلیٰ سندھ

January 9, 2016 2:06 pm0 commentsViews: 35

حکومت نے اپنا فرض سمجھ کر دہشت گردی کیخلاف سخت قدم اٹھایا ہے، سید قائم علی شاہ
اسلام مکمل طور پر امن و سلامتی کا مذہب ہے، سیرت کانفرنس سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ اسلام مکمل طور پر امن و سلامتی کا مذہب ہے لیکن چند بھٹکے ہوئے نوجوان کی جانب سے اسلام کے نام پر دہشت گردی کرنے کی وجہ سے دنیا کی دیگر اقوام ومذاہب میں اسلام کے خلاف غلط تاثر جنم لے رہا ہے اس صورتحال میں علماء کرام کا فرض ہے کہ جہاں وہ ملک کی سلامتی کیلئے دعا کرتے ہیں وہاں وہ اپنے عملی اقدام سے اسلام کے نام پر دہشت گردی کرنے والی تنظیموں اور ان میں شامل بھٹکے ہوئے نوجوانوں کو واپس اسلام کی راہ پر لانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں اور تمام انسانوں کے تحفظ کے لئے انہیں قائل کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو وزیر اعلیٰ ہائوس میں صوبائی محکمہ مذہبی امور کے تحت منعقدہ تیسری سیرت النبی ﷺ کانفرنس سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے واضح کیا کہ اگر ہم نبی کریم ﷺ کی بتائی ہوئی تعلیمات پر عمل پیرا ہوں تو دنیا کی عظیم قوم بن سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ آج بھٹکے ہوئے نوجوانوں کی وجہ سے پاکستان پر پوری دنیا کی نظریں ہیں اور یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ شاید دہشت گردی پاکستان سے اٹھ رہی ہے لہٰذا ہمیں اس تاثر کو مٹانا ہے سید قائم علی شاہ نے کہا کہ حکومت نے اپنا فرض سمجھ کر دہشت گردی کے خلاف سخت قدم اٹھایا ہے اور ہم نے دہشت گردی کے ساتھ ساتھ سنگین جرائم پر بھی قابو پایا ہے تاہم اس امن کو مستقل بنانے کیلئے علماء کرام کے تعاون کی ہمیں سخت ضرورت ہے۔