ملزمان ٹی وی پر نظرآتے ہیں، پولیس کو کیوں نہیں ملتے، عدالت کے ریمارکس

January 9, 2016 4:43 pm0 commentsViews: 22

آئندہ سماعت تک ملزمان کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا جائے، مفرور ملزمان کے ایک بار پھر وارنٹ گرفتاری جاری
ڈاکٹر عاصم پر آئندہ سماعت میں فرد جرم عائد کئے جانے کا امکان، ملزم کو طبی سہولیات فراہم کرنے کا حکم
کراچی( نیوز ڈیسک) کراچی میں انسدادد ہشت گردی کی عدالت نے سابق مشیر پیٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کیس کی آئندہ سماعت کیلئے 19 جنوری کی تاریخ مقرر کردی‘ آئندہ سماعت پر ڈاکٹر عاصم حسین پر فرد جرم عائد کئے جانے کا امکان ہے‘ سابق مشیر پیٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ کیس کی سماعت کے دوران تفتیشی افسر نے مفرور ملزمان کی گرفتاری سے متعلق رپورٹ جمع کرائی‘ رپورٹ کے مطابق کیس میں نامزد ایک ملزم عثمان معظم کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ رئوف صدیقی کو ذاتی طور پر پیش ہونے کا حکم دیا گیا تھا جو عدالت میں ہی موجود ہیں‘ رپورٹ کے مطابق ملزمان کو گرفتار کرنے کی کوششیں جاری ہیں‘ عدالت نے مفرور ملزموں کو گرفتار نہ کرنے پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے تفتیشی افسر سے کہا کہ ملزم ٹی وی چینلوں پر آرہے ہیں آپ کہتے ہیں نہیں ملے اور دیگر ملزمان کو ملک سے باہر کیوں فرار ہونے دیا گیا؟ عدالت نے حکم دیا کہ ملزموں کو گرفتار کرکے پیش کیا جائے‘ عدالت نے کیس میں4 مفرور ملزمان کے ایک بار پھر وارنٹ گرفتاری بھی جاری کئے‘ ملزمان میں انیس قائم خانی‘ سلیم شہزاد‘ قادر پٹیل او وسیم اختر شامل ہیں ‘ ڈاکٹر عاصم کیس میں ایم کیو ایم کے رہنما رئوف صدیقی کی ضمانت قبل از گرفتاری میںبھی19 جنوری تک توسیع کردی گئی‘ ڈاکٹر عاصم کے وکلاء نے طبی معائنے کی درخواست جمع کرائی جس میں استدعا کی گئی ہے کہ ڈاکٹر عاصم کونجی اسپتال منتقل کیا جائے جس پر رینجرز کے وکیل نے اعتراض کیا۔عدالت نے کیس کی سماعت 19 جنوری تک ملتوی کرتے ہوئے ڈاکٹر عاصم کو طبی سہولیات فراہم کرنے کا حکم دے دیا۔