ملیر، واٹر ہائیڈرنٹ کیخلاف سیاسی تنظیموں کا احتجاجی دھرنا

January 11, 2016 6:01 pm0 commentsViews: 19

مظاہرین کا 48گھنٹوں میں ہائیڈرنٹ بند نہ ہونے کی صورت میں نیشنل ہائی وے بند کرنے کا اعلان
ہائیڈرنٹ مافیا ملیر کے گوٹھوں کے پینے کے پانی پر ڈاکہ ڈال رہی ہے، 24گھنٹے پانی کی چوری جاری ہے، مظاہرین
کراچی( اسٹاف رپورٹر) نیشنل ہائی وے پر شفیع گوٹھ کے سامنے قائم کر دہ واٹر ہائیڈرنٹ کے خلاف ملیر کی مختلف سیاسی و سماجی تنظیموں کی جانب سے احتجاج کرکے دھرنا دیا گیا۔ دھرنے میں شامل افراد کے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈ تھے جس پر ہائیڈرنٹ بند کرو، واٹر بورڈ انتظامیہ دیہی علاقوں کے ساتھ ظلم بند کرو کے نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے48 گھنٹوں میں ہائیڈرنٹ بند نہ ہونے کی صورت میں نیشنل ہائی وے بند کرنے کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق شفیع گوٹھ نیشنل ہائی وے پر قائم واٹر ہائیڈرنٹ کے خلاف گزشتہ روز ملیر کی مختلف سیاسی و سماجی تنظیموں کی جانب سے ملیر پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرکے دھرنا دیا گیا، دھرنے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ابرار شاہ، اکبر لاشاری ، فرید بلوچ و دیگر نے اپنے خطاب میں کہا کہ با اثر واٹر ہائیڈرنٹ مافیا ملیر کے گوٹھوں کے پینے کے پانی پر ڈاکہ ڈال رہی ہے اور رات کے اوقات کے بجائے24 گھنٹے پانی چوری کیا جا رہا ہے ہائیڈرنٹ کو بند کروانے کیلئے بلاول بھٹو زرداری کے احکامات بھی نظر انداز کر دئے گئے ہیں۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ سندھ، چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ، ڈی جی رینجرز اور وزیر بلدیات سندھ سے اپیل کی ہے کہ شفیع گوٹھ کے ہائیڈرنٹ کو فوری بند کیا جائے۔ دوسری صورت میں نیشنل ہائی وے پر دھرنا دیاجائے گا۔