پیپلز پارٹی کا وزیراعظم پر چوہدری نثار کا قلمدان تبدیل کرنے کیلئے دبائو

January 14, 2016 2:19 pm0 commentsViews: 33

اقتصادی راہداری، کالعدم تنظیموں اور داعش کی بھرتیوں جیسے مسائل اچھال کر حکومت پر پریشر ڈالنے کی حکمت عملی اختیار کرلی گئی
سندھ حکومت کیلئے رینجرز اختیارات، ڈاکٹر عاصم کیس ودیگر ایشو درد سر بن گئے، چوہدری نثار کی ہٹ دھرمی سے وزیراعلیٰ سندھ پریشان، کشیدگی برقرار
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) رینجرز کو اختیارات دینے کے حوالے سے سندھ حکومت اور وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کے درمیان کشیدگی ختم نہیں ہو سکی۔ 2 ہفتے گزرنے کے باوجود وزیر اعظم کی ہدایت پر نہ تو چوہدری نثار نے کراچی کا دورہ کیا اور نہ ہی وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ سے کوئی ٹیلی فونک رابطہ کیا گیا، ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی کی قیادت نے چوہدری نثار کے رویے کو اپنے لئے انتہائی توہین آمیز تصور کرتے ہوئے وزیر اعظم پر چوہدری نثار کا قلمدان تبدیل کرنے کیلئے دبائو بڑھانا شروع کر دیا، پیپلز پارٹی کے اندرونی ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی کی قیادت کیلئے کرپشن کے معاملات درد سر بنے ہوئے ہیں۔ اور رینجرز کے اختیارات کا معاملہ سندھ اسمبلی میں لے جانے کے باوجود ان کی گلو خلاصی نہیں ہو پائی اور رینجرز کی کارروائیاں بدستور جاری ہیں جس کے بعد پیپلز پارٹی نے وزیر اعظم نواز شریف پر اقتصادی راہداری ، پنجاب میں کالعدم تنظیموں اور داعش کی بھرتیوں جیسے ایشوز کو اچھال کر چوہدری نثار کی وزارت تبدیل کرنے کیلئے دبائو بڑھانا شروع کردیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کی جانب سے وزیر اعظم کو یہ تجویز دی گئی ہے کہ چوہدری نثار علی خان کو وزارت خارجہ کا قلمدان سونپ دیا جائے یا ڈپٹی وزیر اعظم کا عہدہ دید یا جائے تاہم وزیر اعظم نواز شریف کیلئے چوہدری نثار علی خان کو وزارت داخلہ سے ان کی مرضی اور رضا مندی کے بغیر ہٹانا ممکن نہیں ہے۔