سوات میں لڑکی کو کوڑے مارنے کی ویڈیو جعلی نکلی

January 14, 2016 2:51 pm0 commentsViews: 20

2009ء میں گلہ بان لڑکی چاند بی بی کو طالبان نے کوڑے مارنے کی ویڈیو میڈیا کو جاری کی تھی
شوہر کے مطابق ویڈیو جھوٹ پر مبنی تھی، سرکاری وکیل، سپریم کورٹ کے3 رکنی بنچ نے ازخود نوٹس نمٹا دیا
اسلام آباد( یو پی پی ) سپریم کورٹ نے سوات میں2009ء میں 17 سالہ لڑکی چاند بی بی کو کوڑے مارنے سے متعلق ویڈیو کو جعلی قرار دے کر از خود نوٹس نمٹا دیا۔ چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بنچ نے17 سالہ لڑکی چاند بی بی کو کوڑے مارنے سے متعلق کیس کی سماعت کی، جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دئیے کہ گلہ بان بچی کو کوڑے مارنے کی ویڈیو جعلی تھی۔ جعلی ویڈیو کو میڈیا پر ریلیز کیا گیا قبل ازیں حکومتی وکیل نایاب گرویزی نے عدالت کو بتایا کہ وہ ویڈیو جعلی نکلی تھی، چاند بی بی اور اس کے خاوند نے بیان دیا تھا کہ ایسا کوئی واقعہ نہیں ہوا۔ خیال رہے کہ 3 اپریل 2009ء کو ایک ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں طالبان کے ایک گروہ کی جانب سے17 سالہ لڑکی چاند بی بی کو کوڑے مارتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔ 2 منٹ کی ویڈیو موبائل فون سے بنائی گئی تھی۔ جس میں سیاہ برقعے میں ملبوس لڑکی کو34 کوڑے مارتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔