ایس آر اوز واپس، قوم کو 125ارب کے مزید ٹیکسز کا تحفہ

January 18, 2016 2:23 pm0 commentsViews: 12

آئی ایم ایف کے دبائو پر عوام کو تمام ٹیکس رعایتیں ختم کرنے کیلئے چیئرمین ایف بی آر کی زیر صدارت اجلاس آج ہوگا
آئی ایم ایف سے معاہدے کے مطابق جون 2016تک عوام کو دیئے گئے ریلیف واپس لے لئے جائیں گے، ایف بی آر ذرائع
اسلام آباد( آن لائن) فیڈرل بورڈ آف ریونیو ( ایف بی آر) عوام کو مزید ٹیکس رعایت نہ دینے کے لئے فیصلہ آج پیر کو کرے گا۔ رعایتی ایس آر اوز واپس لے کر125 ارب روپے کے مزید ٹیکس میں اضافہ کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کے مطالبے پر عوام کو دئیے گئے تمام ٹیکس رعاتیں ختم کرنے کیلئے چیئر مین ایف بی آر کی زیر صدارت بورڈ آف کونسل کا اہم اجلاس آج ہوگا۔ گزشتہ دو سال میں260 روپے کے رعایتی ایس آر اوز واپس لئے جا چکے ہیں۔ آئی ایم ایف سے معاہدے کے مطابق جون2016ء تک عوام کو دئیے گئے تمام ٹیکس ریلیف واپس لئے جانے تھے ایف بی آر نے اسی روڈ میپ کے مطابق تمام بے نامی اور رعایتی ایس آر اوز میپ واپس لینے کیلئے ایف بی آر کا اعلیٰ سطح کا اجلاس آج ہو رہا ہے۔ ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ رعایتی ایس آر اوز واپس لینے سے مختلف شعبوں میں ٹیکس میں اضافہ ہوجائے گا۔ اور اس سے ایف بی آر کا رکھا گیا ریونیو ہدف 3104 ارب روپے حاصل کرنے میںمدد گار ثابت ہوگا۔ آئی ایم ایف سے آئندہ مذاکرات 26 جنوری کو ہوں گے اور تمام ایس آر اوز کوواپس لے کر قوم پر نئے ٹیکس کا تحفہ دیا جائے گا۔ بورڈ آف کونسل کے اجلاس میں سیکریٹری خزانہ وزیر اعظم کے معاون برائے ریونیو ہارون اختر اور ایف بی آر کے تمام ونگز کے ممبر بھی شریک ہوں گے۔