سندھ حکومت گنے کے کاشتکاروں کا معاشی قتل بند کردے، معراج الہدیٰ

January 18, 2016 3:29 pm0 commentsViews: 19

زراعت کو تباہی کی طرف دھکیلا جارہا ہے، 185 روپے من قیمت مقرر کرکے فاقہ کشی سے بچایاجائے
حکومت ہوش کے ناخن لے، زراعت دشمن پالیسی ختم نہ ہوئی تو کاشتکار بڑی تحریک چلائیں گے، وفد کے ہمراہ پریس کانفرنس
کراچی( اسٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیق نے کہا ہے کہ سندھ حکومت آباد گاروں کو گنے کے مناسب نرخ نہ دے کر ان کا معاشی قتل اور سندھ کی زراعت کو تباہی کی طرف دھکیل رہی ہے سندھ کے ہاریوں کو زراعت چھوڑنے پر مجبور کیا جا رہا ہے حکومت نے اپنی بے حسی اور زراعت دشمنی پر مبنی اپنی پالیسیوں کو ختم نہ کیا تو کاشتکار اپنے حقوق کے حصول کیلئے بڑی تحریک چلائیں گے حکومت سندھ ہوش کے ناخن لے گنے سمیت آباد گاروں کو ان کی فصلوں کو مناسب نرخ کم از کم 185 روپے فی من دیکر انہیں فاقہ کشی سے بچایا جائے۔ حکومت زراعت کے فروغ کیلئے اپنا کردار ادا کرے، 2018حکمرانوں کیلئے ٹیسٹ کیس ہوگا اگر حکومت نے اب بھی ہوش کے ناخن نہ لئے تو صوبے سندھ میں شکر کا بحران پیدا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کو قباء آڈیٹوریم میں سندھ آباد گار بورڈ کے صدر رئیس عبدالمجید خان نظامانی کے پنجاب میں182 روپے فی من گنے کے مقابلے میں سندھ حکومت 172 روپے فی من دینے کیلئے تیار نہیں جو سندھ کے ہاریوں کے ساتھ سراسر ظلم ہے۔