اعلیٰ سیاسی شخصیات کے اربوں روپے بیرون ملک منتقل ایف آئی اے نے 2منی چینجرز کو گرفتار کرلیا

January 19, 2016 5:02 pm0 commentsViews: 37

سندھ سے تعلق رکھنے و الے سیاستدانوں ، ارکان اسمبلی، بیوروکریٹس اور وزراء نے غیرقانونی طریقے سے بھاری رقوم بیرون ملک منتقل کی ہیں
گرفتارہونے والے ملزمان سندھ کی تین اہم شخصیات کے اربوں روپے غیرقانونی طریقے سے بیرون ملک بھجوانے کی تیاریاں کررہے تھے، ایف آئی اے نے گودھرا میں منی ایکسچینج کے دفتر پر چھاپہ مار کر اہم دستاویزات سمیت حراست میں لے لیا
منی چینجرز کی گرفتاری سندھ کی اہم شخصیت کے فرنٹ مین محمد علی شیخ کی معلومات پر عمل میں آئی ہے، گرفتار ملزمان کے انکشافات کے بعد ان کے کمپیوٹر اور موبائل فون فرانزک تفتیش کے لیے بھجوانے کا فیصلہ کیا گیا ہے
کراچی( کرائم ڈیسک) سندھ کی اہم سیاسی شخصیات نے غیر قانونی طریقے سے اربوں روپے بیرون ملک بھجوا دئیے سندھ کے کئی اہم بیورو کریٹس وزراء اور ارکان اسمبلی غیر قانونی طریقے سے رقوم بیرون ملک بھجوا نے میں ملوث ہیں۔ ایف آئی اے کی کارروائی، سندھ کی اعلیٰ شخصیات کیلئے حوالہ ہنڈی کے ذریعے اربوں روپے بیرون ملک منتقل کرنے والے دو منی چینجرز کو گرفتار کرلیا گیا، منی چینجرز کو اہم سیاسی شخصیات کے فرنٹ مین محمد علی شیخ سے ملنے والی معلومات پر گرفتار کیا گیا۔ ایف آئی اے اسٹیٹ بینک سرکل کی کارروائی میں ہنڈی حوالہ کے الزام میں گرفتار ہونے والے غیر قانونی منی چینجر عرفان عرف لمبا اور حنیف رنگیلا نے گرفتاری کے بعد سنسنی خیز انکشاف کرتے ہوئے بتایا ہے کہ سندھ کے کئی معروف تاجروں اور صنعتکاروں کے اربوں روپے حوالہ ہنڈی کے ذریعے بیرون ملک منتقل کرنے کے علاوہ یہ دونوں سندھ حکومت کی تین اہم شخصیات کے اربو ں روپے بھی غیر قانونی طور پر بیرونی ملک منتقل کرتے رہے تھے۔ ذرائع کے مطابق ملزمان کو ایف آئی اے اسٹیٹ بینک سرکل کی جانب سے گودھرا کے علاقے میں چھاپہ مار کر اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ ایک غیر قانونی منی ایکسچینج میں موجود تھے اور وہاں حوالہ ہنڈی کا کام کیا جا رہا تھا کمپیوٹر اور موبائل فون کے ریکارڈ سے الیکٹرونک ٹریول ٹرانزکشن کے علاوہ دستاویزی ثبوت بھی بر آمد کئے گئے تھے۔ ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرا لیا گیا ہے۔ ایف آئی اے ذرائع کے مطابق اہم شخصیات کے اربوں روپے روہڑی سے تعلق رکھنے والے محمد علی شیخ کے ذریعے حنیف رنگیلا تک پہنچتے تھے۔ ذرائع نے بتایا کہ محمد علی شیخ اہم شخصیات کے فرنٹ مین کی حیثیت سے کام کرتے رہے اور ساتھ ہی اپنی رقوم بھی بیرون ملک منتقل کراتے رہے ہیں۔ ذرائع کے مطابق محمد علی شیخ 18 جون 2015ء کو دبئی جانے کیلئے ایئر پورٹ روانہ ہوئے تھے، تاہم کراچی ایئر پورٹ پہنچنے سے قبل ہی انہیں حساس اداروں کے اہلکار اپنے ساتھ لے گئے۔ ذرائع نے بتایا کہ گرفتار منی چینجرز کے متعلق نئے انکشافات کے بعد ان کے کمپیوٹر اور موبائل فون فرانزک تفتیش کیلئے بھجوانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جس کے بعد سندھ سے تعلق رکھنے والی اہم سیاستدانوں، صنعت کاروں، بیورو کریٹس، ارکان اسمبلی اور وزراء کے خلاف ایکشن لیا جائے گا۔ جو مبینہ طور پر غیر قانونی طور پر بھاری رقوم بیرون ملک بھجوانے میں ملوث ہیں۔