قومی اسمبلی اجلاس، سائیں سرکار کہنے پر پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کے ارکان میں جھڑپ

January 19, 2016 5:32 pm0 commentsViews: 19

قائم علی شاہ کی حکومت کو سائیں سرکار کہہ کر مذاق اڑایا جاتا ہے، ہم خادم اعلیٰ حکومت کو مولاجٹ حکومت کہیں گے، رکن پیپلز پارٹی، عمران ظفر لغاری
پی پی پی پنجاب پر تنقید نہ کرے، سندھ ترقی میں پیچھے رہ گیا تو قصور پیپلز پارٹی کا ہے، ن لیگ کا نہیں، حکومتی رکن رجب بلوچ کا جواب
اسلام آباد( آئی این پی) قومی اسمبلی میں صدارتی خطاب پر بحث کے دوران پیپلز پارٹی اور ( ن) لیگ کے ارکان کی ایک دوسرے کی حکومتوں پر شدید تنقید، پیپلز پارٹی کے رکن اسمبلی عمران ظفر لغاری نے کہا کہ سندھ میں قائم علی شاہ کی حکومت کو سائیں سرکار کہہ کر مذاق اڑایا جاتا ہے۔ خادم اعلیٰ کی حکومت کو مولا جٹ کہیں گے وزیر اعظم پارلیمنٹ کو اہمیت ہی نہیں دیتے۔ وفاق سے اگر لاہور کے مسائل حل ہوتے ہیں تو باقی صوبوں کے مسائل بھی وفاق سے حل کئے جائیں جبکہ حکومتی رکن رجب بلوچ نے کہا کہ پی پی پی پنجاب پر تنقید نہ کرے، سندھ ترقی میں پیچھے رہ گیا تو قصور پیپلز پارٹی کا ہے، پنجاب یا ن لیگ کا نہیں، ایم کیو ایم کے رکن ایس اے اقبال قادری نے کہا کہ صدر نے اپنی تقریر میں کہا کہ ملک سے دہشت گردی کو ختم کریں گے لیکن دہشت گردی کو دہشت گردی سے ختم نہیں کیا جا سکتا۔