انگریزی نہ سیکھنے والے تارکین وطن کو برطانیہ سے نکالنے کی دھمکی

January 19, 2016 5:44 pm0 commentsViews: 27

ایک لاکھ 90ہزار مہاجرین انگریزی نہیں جانتے، 40 ہزار خواتین انگریزی سے بالکل ناواقف ہیں
خصوصاً مسلم خواتین انگریزی سیکھنے پر توجہ دیں، ورنہ برطانیہ سے نکالنے پر مجبور ہونگے، وزیراعظم
لندن( یو پی پی) برطانوی وزیر اعظم نے دھمکی دی ہے کہ انگریزی نہ سیکھنے والے مہاجرین کو ملک سے بے دخل کر دیں گے۔ ڈیوڈ کیمرون نے لندن کے مقامی اخبار دی ٹائمز میں لکھے گئے ایک کالم میں کہا تھا کہ مہاجرین کو انگریزی زبان میں مہارت حاصل کرنے پر مجبور کیا جائے گا۔ ورنہ انہیں برطانیہ سے نکالا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانوی معاشرے میں مسلم خواتین کو تعصب اور صنفی امتیاز سے بچانے کیلئے انگریزی سکھانے کی کوشش میں اضافہ کرنا ہوگا اب وقت آگیا ہے کہ خواتین پر نقصان دہ اثر رکھنے والے قلیل تعداد میں موجود مسلم مردوں کے پسماندہ رویوں کا مقابلہ کیا جائے ۔ ان کا کہنا تھا کہ اطاعت گزاری کی وجہ سے لوگ علیحدگی میں شخصیت سازی کے ناقص خیال کے پیرو کار بن جاتے ہیں۔ ہمیں اطاعت گزار رویے کے سامنے حقائق سے گھبرانا نہیں چاہئے۔ کنزرویٹو پارٹی کے رہنما نے مزید کہا کہ مختلف کمیونیٹیز کی خواتین کیلئے20 ملین پائونڈ کا فنڈ جاری کیا ہے جس کے ذریعے معاشرے سے الگ رہنے والی خواتین کومعاشرے کا فعال حصہ بنایا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ مہاجرین کو انگریزی زبان میں مہارت حاصل کرنے پر مجبور کیا جائے گا۔ ورنہ انہیں برطانیہ سے نکالا جا سکتا ہے۔ کیمرون کا کہنا تھا کہ ایک نئے اندازے کے مطابق تقریباً ایک لاکھ90 ہزار مسلمان خواتین یا22 فیصد خواتین برطانیہ میں کئی عشروں تک رہنے کے باوجود بہت تھوڑی یا بالکل ہی انگریزی نہیں جانتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ 40 ہزار خواتین تو سرے سے انگریزی ہی نہیں جانتی۔ ان اعداد وشمار کو دیکھنے کے بعد یہ بات ہمارے لئے حیرت کا باعث نہیں ہے کہ پاکستان اور بنگلہ دیش نژاد خواتین کا 60 فیصد حصہ معیشت میں بالکل حصہ نہیں ڈالتا ہے۔