آج صبح، چارسدہ میں باچا خان یونیورسٹی پر دہشتگردوں کا حملہ ،سیکڑوں طلباء محصور

January 20, 2016 3:24 pm0 commentsViews: 22

یونیورسٹی میں وقفے وقفے سے فائرنگ اور دھماکوں کی آوازیں ،3افراد زخمی، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کا آپریشن
دہشت گرد کھیتوں کے ذریعے یونیورسٹی میں داخل ہوئے،پاک فوج کے دستے بھی پہنچ گئے، حملے کے وقت یونیورسٹی میں مشاعرہ جاری تھا
پشاور ( مانیٹرنگ ڈیسک) خیبر پختونخوا کے ضلع چار سدہ میں واقع باچا خان یونیورسٹی پر آج صبح دہشت گردوں نے حملہ کر دیا، وقفے وقفے سے فائرنگ اور دھماکوں کی آوازیں سنائی دیں۔ یونیورسٹی میں سینکڑوں طلبہ و اساتذہ محصور ہوگئے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق ایک درجن افراد زخمی ہوئے۔ یونیورسٹی چارسدہ سے 15 کلو میٹر کے فاصلے پر اطلاع ملتے ہی پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے موقع پر پہنچ گئے یونیورسٹی کو گھیرے میں لے کردہشت گردوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ شروع ہوا۔ یونیورسٹی پر حملے کی اطلاع ملنے پر طلباء و طالبات کے والدین اور رشتہ دار موقع پر پہنچ گئے۔ علاوہ ازیں نجی ٹی وی کے مطابق دہشت گرد کھیتوں میں چھپ گئے تھے سیکورٹی فورسز نے داخلی و خارجی راستوں کو گھیرے میں لے کر دہشت گردوں کی تلاش شروع کر دی ہے پاک فوج کے دستے بھی اس موقع پر پہنچ گئے یونیورسٹی میں محصور طلباء و طالبات اور اساتذہ نے موبائل فون پر اپنے والدین اور دوستوں سے رابطہ کیا نجی ٹی وی کے مطابق باچا خان یونیورسٹی میں ایک بڑے دھماکے کی آواز بھی سنائی دی گئی۔ چار سدہ کے تمام اسپتالوں ایمر جنسی نافذ کر دی گئی۔ پولیس کی بکتر بند گاڑیاں یونیورسٹی میں داخؒ ہوگئی جبکہ یونیورسٹی کے50 گارڈ ڈیوٹی پر مامور تھے ڈی آئی جی مردان سعید خان کے مطابق حملے کے یونیورسٹی کے 2 چوکیدار بھی زخمی ہوئے۔ دہشت گردوں کی تعداد 5 سے10 ہو سکتی ہے۔ حملے کے وقت یونیورسٹی باچا خان کی برسی کے موقع پر مشاعرہ جاری تھا جس میں 100 سے200 طلبا ء و اساتذہ موجود تھے۔