گیس صارفین سے 101ارب روپے کی ریکوری کی منصوبہ بندی

January 20, 2016 4:06 pm0 commentsViews: 17

حکومت رواں مالی سال کے دوران گیس سیل پر جی آئی ڈی پی کے ذریعے145ارب روپے اکٹھا کرنا چاہتی ہے
گیس کمپنیاں درآمد شدہ ایل این جی کو ٹرانسمٹ کرنے اورپائپ لائنیں نصب کرنے کے منصوبے کیلئے 101 ارب روپے صارفین سے وصول کرینگی
اسلام آباد( آن لائن) گیس انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ سیس ( جی آئی ڈی پی ) کے اربوں ڈالر اکٹھے کرنے کے باوجود وزارت پیٹرولیم گیس صارفین سے الگ طور پر101 ارب روپے کی ریکوری کی منصوبہ بندی کر رہی ہے تا کہ گیس کمپنیوں کیلئے پائپ لائنیں نصب کی جا سکیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے دوران گیس سیس پر جی آئی ڈی پی کے ذریعے45 ارب روپے اکٹھا کرنا چاہتی ہے۔ اور اس میں پارلیمنٹ اور عدالتوں کو بھی باور کرایا ہے کہ یہ رقم گیس پائپ لائن کی تعمیر کیلئے استعمال ہوگی۔ گزشتہ5 سالوں میں صارفین کے مختلف طبقات سے جی آئی ڈی پی جمع کا گیا ہے جس کا مقصد گیس پائپ لائن انفرااسٹرکچر کے لئے فنڈز کا نظام کرنا ہے تا کہ ترکمانستان اور ایران سے مجوزہ گیس پائپ لائن کو سہولیات فراہم کی جا سکیں۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ دنوں کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا خصوصی اجلاس منعقد ہوا جس میں وزارت پیٹرولیم کی درخواست پر غور کیا گیا تا کہ صارفین سے101 ارب روپے وصول کئے جا سکیں۔ تا کہ گیس کمپنیاں اور در آمد شدہ ایل این جی کو ٹرانسمٹ کرنے کیلئے پائپ لائن نصب کر سکیں۔ وزارت پیٹرولیم نے ای سی سی پر بھی زور دیا ہے کہ وہ گیس کمپنیوں کو اجازت دیں تا کہ وہ سرمایہ کاری پر ریٹرن کلیم کر سکیں۔