سانحہ چار سدہ، سابق افغان انٹیلی جنس افسر کے ملوث ہونے کا انکشاف

January 22, 2016 3:46 pm0 commentsViews: 34

اسلام آباد(آئی این پی، این این آئی) پاکستان نے چارسدہ حملے میں سابق افغان خفیہ ایجنسی کے سابق افسر کے براہ راست ملوث ہونے کے ثبوت اکٹھے کر لیے، جن میں انکشاف ہوا ہے کہ باچا خان یونیورسٹی پر حملے کیلئے افغانستان کے سابق انٹیلی جنس افسر نے معاونت کی، جمعرات کو ایک نجی ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان کو سابق این ڈی ایس چیف کے باچا خان یونیورسٹی پر حملے میں براہ راست ملوث ہونے کے ثبوت مل گئے ہیں، افغانستان کی خفیہ ایجنسی نیشنل ڈائریکٹویٹ آف سیکورٹی کے سابق سربراہ رحمت اللہ نبیل جو کہ افغان صدر کے پاکستان کے دورے پر احتجاجاً مستعفی ہو گئے تھے نے چار سدہ یونیورسٹی پر حملہ کرایا ہے، افغانستان میں بھارتی قونصلیٹ نے حملے کیلئے سابق انٹیلی جنس افسر رحمت اللہ نبیل کو ٹاسک دیا تھا۔