جنوبی پنجاب داعش کی آماجگاہ بنا ہوا ہے، فاروق ستار

January 22, 2016 4:45 pm0 commentsViews: 20

نیشنل ایکشن پلان پر صدق دل سے عمل نہیں کیا گیا، دہشت گردوں کی بجائے سیاسی جماعتوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے
سانحہ چارسدہ ملک اور علم دشمن عناصر کی کارروائی ہے ،متحدہ کے رہنمائوں کا کراچی میں شہداء کی یاد میں تعزیتی اجتماع سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) چار سدہ یونیورسٹی کا سانحہ نیشنل ایکشن پلانNAPکی ناکامی ہے جنوبی پنجاب داعش کی آماجگاہ بنا ہوا ہے۔ نیشنل ایکشن پلان بنانے والوں کے ذہن میں ملک کو دہشت گردی سے پاک کرنے میں مختلف ابہام ہے۔ نیشنل ایکشن پلان کی روح سے سندھ خیبر پختونخو ا اور بلوچستان میں فوج اور رینجرز سے آپریشن کروائے جا رہے ہیں لیکن پنجاب میں پولیس کو اختیار دئیے جا رہے ہیں سانحہ چار سدہ ملک اور علم دشمن عناصر کی کارروائی ہے۔ گزشتہ چند ماہ میں بدھ بیڑ ایئر بیس ، جمرود اور کارخانو کوٹ کے بعد خیبر پختونخوا میں ہونیوالا ایک اور واقعہ جو نا قابل مذمت ہے۔ ان خیالات کا اظہار متحدہ قومی موومنٹ کے تحت سانحہ باچا خان یونیورسٹی چار سدہ کے شہداء کی یاد میں منعقدہ تعزیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سینئر ڈپٹی کنوینر ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر گزشتہ ایک برس میں صدق دل سے عمل نہیں کیا گیا۔ فاروق ستار نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان ملک دشمن اور دہشت گردوں کیلئے بنایا گیا تھا لیکن سیاسی جماعتوں کو اس کا نشانہ بنایا جا رہا ہے سندھ اور پنجاب کے کائونٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ داعش کے لوگوں کو گرفتار کر رہے ہیں، جنوبی پنجاب داعش کی آماجگاہ بنا ہوا ہے لیکن کارروائیوں میں سنجیدگی نہیں ہے، انہوں نے سوال کیا کہ پنجاب میں فوج اور رینجرز کے ذریعے آپریشن کیوں نہیں کروایا جا رہا، کالعدم تنظیموں کو نہیں روکا جا رہا ہے لیکن سیاسی جماعتوں کی سرگرمیوں پر پابندی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کا آڈٹ کرکے قوم کے سامنے حقائق لائے جائیں اور عوام سے حقائق چھپانے کی روش ختم کی جائے۔ اس موقع پر سینئر صحافی محمود شام نے کہا کہ سانحہ چار سدہ نے آرمی پبلک اسکول کی طرح پوری قوم کو غمگین کر دیا ہے۔ آغا مسعود نے کہا کہ ملک بنیادی طور پر مختلف اقتصادی اور معاشرتی مسائل کا شکار ہے۔ ریاست اپنے شہریوں کے ساتھ یکساں سلوک کرنے میں ناکام ہو چکی ہے۔