ڈیرہ بگٹی میں دھماکہ،وزیرداخلہ بلوچستان بال بال بچ گئے

January 23, 2016 1:54 pm0 commentsViews: 22

میرسرفراز بگٹی بیکٹر جارہے تھے، 2گاڑیاں زد میں آکر تباہ، سیکورٹی اہلکار محفوظ رہے
ضلع آوارن کے علاقے مشکے میں ایف سی کارروائی،6دہشت گرد ہلاک،2اہلکار زخمی ہوگئے
کوئٹہ( نیوز ڈیسک) بلوچستان کے وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی کے قافلے کو ڈیرہ بگٹی میںبارودی سرنگ دھماکے سے نشانہ بنایا گیا جس میں وزیر داخلہ بال بال بچ گئے، دو گاڑیاں تباہ ہوگئیں۔ ضلع آوارن کے علاقے مشکے میں ایف سی کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں6 دہشت گرد ہلاک جبکہ ایک ایف سی اہلکار شہید اور2زخمی ہوگئے۔ آوارن میں ہی حساس ادارے اور ایف سی کے سرچ آپریشن اور فائرنگ کے تبادلے میں2 شر پسند مارے گئے۔ ضلع لسبیلہ میں فائرنگ کے تبادلے کے بعد 8 شر پسندوں کو گرفتار کرکے بھاری مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود قبضے میں لے لیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق میر سرفراز بگٹی جمعہ کو8 گاڑیوں کے قافلے میں ڈیرہ بگٹی سے بیکٹر جا رہے تھے کہ کچے میں دہشت گردوں نے نصب بارودی سرنگ دھماکے سے اڑا دی، دو گاڑیاں زد میں آکر تباہ ہوگئیں تاہم وزیر داخلہ اور تمام سیکورٹی اہلکار محفوظ رہے۔ وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے دھماکے کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ایسے حملے ہمیں مرعوب نہیں کر سکتے پیچھے سے وار کرنا بلوچ روایات کے منافی ہے۔ بی بی سی کے مطابق وزیر داخلہ کی گاڑی کو بم حملے کا نشانہ بنانے کی ذمہ داری کالعدم بلوچ ریپبلکن آرمی نے قبول کی ہے۔ ادھر ایف سی ترجمان کے مطابق آوارن کے علاقے میں سرچ آپریشن کے دوران شر پسندوں نے فائر کھول دیا، جوابی فائرنگ سے 2 شر پسند مارے گئے۔ ضلع آوارن کے علاقے مشکے میں فائرنگ کے تبادلے میں6 دہشت گرد ہلاک جبکہ ایک اہلکار شہید اور 2 زخمی ہوگئے۔