پی ٹی سی ایل کے کھربوں کے اثاثے فروخت کرنے کا منصوبہ

January 25, 2016 2:47 pm0 commentsViews: 30

ڈفالٹر کمپنی اتصالات کی انتظامیہ نے پی ٹی سی ایل کی خریداری کی مد میں 26ارب ڈالر کی مکمل ادائیگی نہیں کی ہے
پی ٹی سی ایل کے دفاتر اور دیگر اثاثے کرائے پر دینے یا فروخت کرنے کیلئے پلان تیار، آفسں کی سی ٹی او بلڈنگ میں منتقلی کا عمل جاری
کراچی ( نیوز ڈیسک) پی ٹی سی ایل کے اربوں روپے کے اثاثے فروخت کرنے کا منصوبہ بنا لیا گیا ہے حکومت پاکستان سے پی ٹی سی ایل خریدنے والی یو اے ای کی ڈیفالٹر کمپنی اتصالات کی انتظامیہ نے کراچی سمیت ملک بھر میں پی ٹی سی ایل کے اربوں روپے مالیت کے دفاتر کرائے پر دینے یا فروخت کرنے کا اصولی فیصلہ کرلیا۔ ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی سی ایل کے26 فی صد حصص خریدنے والی یو اے ای کی کمپنی کو نوازنے کیلئے کراچی میں آئی آئی چندریگر روڈ پر واقع پی ٹی سی ایل کے مختلف دفاتر کو سی ٹی او بلڈنگ منتقل کرنے کا عمل شروع کر دیا ہے۔ اسی طرح بعد ازاں دیگر دفاتر خالی ہوجانے کے بعد اندرون خانہ ان کی عمارتوں کو کرائے پر دینے یا فروخت کرنے کا اصولی فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں ذرائع نے بتایا کہ اتصالات نے تاحال حکومت پاکستان کو پی ٹی سی ایل کی خریداری کے26 ارب ڈالر کی مکمل ادائیگی نہیں کی لیکن کمپنی پاکستان سے اربوں روپے کما چکی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی سی ایل کی ملک بھر میں کھربوں روپے مالیت کی جائیداد کو فروخت کرکے رقم حاصل کرنے کا پلان بنا لیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں انتظامیہ کئی سال سے کوششیں کر رہی ہے لیکن اپنے عزائم پر عملدر آمد میں ناکام ہے۔ چند سال قبل ادارے کی یونین کے لیڈر حاجی خان نے بھی انتظامیہ کو سرکاری اراضی فروخت کرنے سے باز رکھنے کیلئے عدالت عالیہ سندھ میں کیس بھی کیا تھا جو تاحال زیر سماعت ہے۔