پولیس اسٹیشنز میں بند رکشائوں کو مالکان کے حوالے کیاجائے

January 25, 2016 2:44 pm0 commentsViews: 22

عدلیہ کے حکم کے مطابق ہم محنت کش قانون کے دائرے میں اپنا روزگار کمانا چاہتے ہیں، فخر الدین
کراچی( اسٹاف رپورٹر) آل سندھ چنگ چی موٹر سائیکل رکشہ اور سی این جی رکشہ ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام بحالی روزگار چنگ چی رکشہ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے ایسوسی ایشن کے چیئر مین فخر الدین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پولیس اسٹیشنز میں بند تمام چنگ چی رکشوں کو فوری طور پر بغیر جرمانہ مالکان کے حوالے کیا جائے تا کہ وہ جلد از جلد سپریم کورٹ کے آرڈر کے مطابق ان میں موڈیفکیشن کرائیں اور اپنا روزگار شروع کر سکیں۔ ٹرانسپورٹ اور ادارے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر چنگ چی رکشوں کو کم از کم ایک سال تک چلنے دیں، گلستان جوہر میں منعقدہ کنونشن سے ایسوسی ایشن کے وائس چیئر مین میاں اشفاق آرائیں، جنرل سیکریٹری محمد شفیع رانا و دیگر عہدیداران نے کہا کہ ہم اعلیٰ عدلیہ کے مشکور ہیں کہ انہوں نے عدل اور انصاف کے تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے چنگ چی موٹر سائیکل رکشہ کو کراچی میں ایک مقام دیا جس کے نتیجے میں مالکان اب کراچی میں آسانی سے اپنا روزگار جاری کر سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ محنت کش لوگ قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اپنے بچوں کے لئے رزق حلال کمانا چاہتے ہیں اور ارباب اختیار و اقتدار سے اپیل کی ہے کہ ہمارے روزگار کی بحالی میں حائل رکاوٹوں اور مشکلات کو حل کریں، رکشوں کوبند کرنے سے45 سے50 ہزار افراد بے روزگار ہو چکے ہیں۔