رینجرز کے پاس کرپشن ختم کرنے کا اختیار نہیں، وزیراعلیٰ سندھ

January 25, 2016 2:48 pm0 commentsViews: 23

سوک سینٹر سے قبضے میں لیا گیا ریکارڈ واپس نہیں کیا گیا، تھر میں کوئلے کے ذخائر200سال چل سکتے ہیں، بچوں کی ہلاکتوں کا سبب کم عمری کی شادی ہے
ضرب عضب کی وجہ سے قبائلی علاقوں سے دہشتگرد کراچی کا رخ کررہے ہیں، کراچی میں امن و امان کی صورتحال 25،30سال سے خراب ہے، میڈیا سے بات چیت
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ تھر میں کوئلے کے اتنے بڑے ذخائر ہیں جو 200 سال چل سکتے ہیں۔ اگر اس کوئلے سے بجلی پیدا کی جائے تو وہ50 فیصد سستی ہوگی۔ رینجرز کے پاس کرپشن ختم کرنے کی اتھارٹی نہیں ہے رینجرز نے کراچی سوک سینٹر سے مختلف ڈپارٹمنٹس کا ریکارڈ قبضے میں لیا اور بعد میں نیب کے حوالے کر دیا جو آج تک واپس نہیں کیا گیا۔ ضرب عضب کی وجہ سے قبائلی علاقوں میں جب دہشت گردوں پر پریشر آتا ہے تو وہ کراچی کی طرف آجاتے ہیں پاکستان پیپلز پارٹی کے خلاف بھٹو دور سے ہی اتحاد بنتے رہے ہیں، تھر میں بچوں کی اموات کا سبب کم عمری کی شادی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے خبر ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ تھر میں کوئلے کے بہت بڑے ذخائر موجود ہیں۔ ان کے بارے میں وزیر اعظم محمد نواز شریف کو بتایا گیا تو وہ مان نہیں رہے تھے۔ جب انہوں نے دیکھا تو وہ بہت خوش ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں امن و امان کی صورتحال حال25، 30 سال سے خراب ہے، نائن الیون کے بعد کراچی کا خاص طور پر امن خراب ہوا، دہشت گرد قبائلی علاقوں اور افغانستان سے ٹریننگ کرکے آتے ہیں اور جب قبائلی علاقوں میں پریشر بڑھتا ہے تو یہ ادھر آجاتے ہیں، 2005ء میں آنے والے زلزلے کے بعد جب متاثرین زلزلہ کراچی آئے تو ان میں بہت سارے دہشت گرد تھے انہوں نے کہا کہ ہر بات چوہدری نثار کو بتاتا تھا، میں نے انہیں نیب کے بارے میں بتایا کہ رینجرز سوک سینٹر سے فائلیں اٹھا کر لے گئی۔ یہ تو ہمارے گلے پڑی ہوئی ہے اور ابھی تک فائلیں واپس نہیں کی ہیں اور فائلیں نیب کے حوالے کر دی ہیں، رینجرز کو کرپشن کے خلاف کارروائی کا کوئی اختیار نہیں ہے۔