سندھ اسمبلی، کم سے کم اجرت کا بل2015 اتفاق رائے سے منظور

January 26, 2016 1:44 pm0 commentsViews: 23

منیمم ویج بورڈ تشکیل دیا جائے گا جس میں آجروں اور اجیروں کے نمائندے شامل ہونگے
جلد نوٹیفکیشن جاری کر دیا جائے گا، تمام ادارے عملدرآمد کرنے کے پابند ہونگے
کراچی (اسٹاف رپورٹر )سندھ اسمبلی نے پیر کو کم سے کم اجرت کا بل 2015 اتفاق رائے سے منظور کر لیا ہے ، جس کے تحت مینیمم ویجز بورڈ تشکیل دیا جائے گا ۔ یہ بورڈ وقتاً فوقتاً کم سے کم اجرت کا تعین کرے گا ۔ بورڈ میں آجروں اور اجیروں کے نمائندے شامل ہوں گے ۔ بورڈ کی طرف سے کم سے کم اجرت کا نوٹیفکیشن جاری ہو گا ، جس پر تمام ادارے عمل درآمد کرنے کے پابند ہوں گے ۔ اس بل کے تحت حکومت ایک اتھارٹی بھی قائم کرے گی ، جس میں کم سے کم اجرت کے قانون پر عمل درآمد نہ ہونے ، کم اجرت دینے یا اجرتوں کی ادائیگی میں تاخیر کی شکایات کی جا سکیں گی ۔ قبل ازیں تین سرکاری بلز متعلقہ اسٹینڈنگ کمیٹیوں کے سپرد کر دیئے گئے ۔ یہ اسٹینڈنگ کمیٹیاں اپنی رپورٹس ایک ہفتے اور دو ہفتے کے اندر دیں گی ۔ ان بلز میں سندھ الائیڈ ہیلتھ پروفیشنل کونسل بل 2014 ، جبری مشقت کے نظام کے خاتمے کا بل 2015 اور کمپنیوں کے منافع میں کارکنوں کی شراکت کا بل 2015 شامل ہیں ۔ اسمبلی میں اپریل ،جون 2015 اور جولائی ، ستمبر 2015 کی صوبہ سندھ کی آمدنی اور اخراجات کی سہ ماہی رپورٹ ایوان میں پیش کر دی گئی ۔ بعد ازاں اسپیکر نے اجلاس منگل کی صبح 10 بجے تک ملتوی کر دیا ۔