جناح اسپتال میں ایشوز پیدا کر دیئے جاتے ہیں،و زیر صحت

January 26, 2016 2:21 pm0 commentsViews: 38

پوسٹ گریجویٹس کی مخصوص نشستوں پر اضافی ڈاکٹرز کو تنخواہ نہیں دی جاتی، جام مہتاب ڈہر
سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن کے نکتہ اعتراض پر ایوان میں بیان
کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ کے وزیر صحت جام مہتاب حسین ڈہرنے کہا ہے کہ جناح اسپتال میں ہر ایک دو ماہ بعد ایشوز پیدا کیوں کر دیئے جاتے ہیں ۔ دیگر اسپتالوں اور اداروں میں ایسے ایشوز کیوں پیدا نہیں ہوتے ۔ یہ سوچنے کی بات ہے ۔ انہوں نے یہ بات پیر کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن کے نکتہ اعتراض پر بیان دیتے ہوئے کہی ۔ اپوزیشن لیڈر نے ڈاکٹروں کے احتجاج اور مریضوں کو درپیش مشکلات کی جانب توجہ مبذول کرائی تھی ۔ وزیر صحت نے کہا کہ پوسٹ گریجویشن کی مخصوص نشستیں ہوتی ہیں ، ڈاکٹروں نے بھی یہ تسلیم کیا ہے کہ کسی کے ساتھ ناانصاف نہیں ہوئی ۔ نشستوں سے زیادہ تعینات ڈاکٹرز کو تنخواہ نہیں دی جاتی اور وہ اس امر کا بانڈ بھر کر دیتے ہیں کہ وہ اعزازی طور پر کام کر رہے ہیں ۔ اگر یہ لوگ احتجاج کریں گے تو ہم آئندہ سال اعزازی تعیناتیاں نہ کرنے پر غور کریں گے ۔ ہاؤس جاب ڈاکٹرز کی تنخواہیں آج جاری کر دی جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرز کا پیشہ مسیحا کا پیشہ ہے ۔ ہم ان کے احتجاج پر وہ کارروائی نہیں کرنا چاہتے ، جس کی قانون ہمیں اجازت دیتا ہے ۔ ڈاکٹرز کو ایسا نہیں کرنا چاہئے ۔ حکومت کوشش کر رہی ہے کہ ان کے خلاف کوئی کارروائی نہ کرے ۔ حکومت کو کارروائی پر مجبور نہ کیا جائے ۔