سندھ اسمبلی کے سرکاری ملازمین کے گھر فی الحال مسمار نہ کرنے کا اعلان

January 26, 2016 2:31 pm0 commentsViews: 25

متبادل رہائشی انتظام کئے بغیر ملازمین کو نہیں ہٹایا جائے گا ،غریب لوگوں کے معاملے پر سیاست نہ کی جائے، اسپیکر سندھ اسمبلی
پارکنگ لاٹ بنانے کا منصوبہ پانچ سال پرانا ہے، ملازمین کو متبادل رہائش دینے کا وعدہ کیا گیا تھا سردار احمد کا اسمبلی میں اظہار خیال
کراچی (اسٹاف رپورٹر ) اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے اعلان کیا ہے کہ سندھ اسمبلی کے احاطے میں رہائش پذیر نچلے درجے کے 10 ملازمین کو جب تک متبادل رہائش فراہم نہیں کی جائے گی ، تب تک انہیں یہاں سے نہیں ہٹایا جائے گا ۔ انہوں نے یہ اعلان پیر کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں کیا ۔ قبل ازیں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن نے نکتہ اعتراض پر اسپیکر کی توجہ اس جانب مبذول کرائی اور کہا کہ سندھ اسمبلی کے احاطے میں پارکنگ لاٹ کی تعمیر کے لیے گرائے گئے کوارٹرز کے متاثرین احتجاج کر رہے ہیں ۔ حکومت انہیں متبادل رہائش فراہم کرے ۔ ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر سید سردار احمد نے کہا کہ پارکنگ لاٹ بنانے کا منصوبہ چار پانچ سال پہلے کا ہے ۔ یہ کوارٹرز خالی کرانے کے لیے ہم نے ملازمین سے وعدہ کیا تھا کہ ہم انہیں متبادل رہائش فراہم کریں گے ۔ اسپیکر آغا سراج درانی نے کہا کہ ہم یہ وعدہ پورا کریں گے ۔ سیکرٹری ایس اینڈ جی اے ڈی کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ان ملازمین کو متبادل رہائش فراہم کریں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے لوگوں نے یہ مسئلہ اٹھایا تھا کہ گاڑیوں کی پارکنگ کا مسئلہ ہوتا ہے ۔ مجھے پارکنگ لاٹ بنانے کا شوق نہیں ہے ۔ غریب مسکین لوگوں کے معاملے پر سیاست نہ کی جائے ‘ انہوں نے کہا کہ میری پوری ہمدردی متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی یہ پالیسی نہیں ہے کہ وہ کسی کو بے گھر کرے ۔ پیپلز پارٹی نے روٹی ، کپڑا اور مکان دینے کا وعدہ کیا ہے ۔ پاکستان تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ اور تحریک انصاف کے ارکان سندھ اسمبلی کے علاوہ ایم کیو ایم کے ارکان سندھ اسمبلی نے بھی متاثرین سے ملاقات کی اور ان سے یکجہتی کا اظہار کیا ۔