نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد میں سست روی عسکری قیادت ناراض

January 26, 2016 2:34 pm0 commentsViews: 24

پنجاب کے 17 شہروں میں فوری آپریشن کے لیے دبائو ڈالا گیا، آپریشن کی تیاریاںمکمل کرلی گئیں
جنوبی پنجاب میں کالعدم تنظیموں کے خلاف آپریشن کیلئے پولیس کو بلٹ پروف جیکٹس اور ہیلی کاپٹر فراہم کیے جائیں
عسکری قیادت کی جانب سے پنجاب سمیت ملک بھر میں آپریشن تیز کرنے کی درخواست کی گئی ہے
لاہور(نیوزڈیسک)عسکری قیادت کی طرف سے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد تیز کرنے کی درخواست کی گئی ہے۔ اس سلسلے میں پنجاب کے 17شہروں میں فوری طور پر آپریشن کرنے کے لیے دبائو ڈالا گیا ہے۔ بتایاجاتا ہے کہ نیشنل ایکشن پلان پرسست روی سے عملدرآمد سے عسکری قیادت ناراض ہے۔ جس نے حکومت سے عمل درآمد کی رفتار بڑھانے کی درخواست کی ہے۔ باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وزیراعظم میاں نوازشریف خود لندن میں اس بات کا اعتراف کرچکے ہیں کہ نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد سست روی کا شکار ہے۔ اس سلسلے میں وفاقی حکومت نے پنجاب سے ایکشن پلان پر عملدرآمد کے سلسلے میں ڈیڈ لائن کا مطالبہ کیا ہے۔ دوسری جانب جنوبی پنجاب میں آپریشن کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔ پنجاب حکومت پولیس کے ذریعے یہ آپریشن کروانا چاہتی ہے۔ جبکہ ضرورت پڑنے پر رینجرز بھی پولیس کی مدد کرے گی۔ معلوم ہوا ہے کہ پنجاب حکومت پولیس کے ذریعے یہ آپریشن کرنا چاہتی ہے جس میں کالعدم تنظیموں کے خفیہ ٹھکانوں کو بھی نشانہ نہیں بنایاجائے گا۔ اس سلسلے میں کمانڈوز کو بلڈ پروف جیکٹس دے دی گئی ہیں جبکہ بکتر بند گاڑیاں اور نگرانی کے لیے ہیلی کاپٹر بھی استعمال کیے جائیں گے۔ دریں اثناء ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ پنجاب حکومت صرف دکھاوے کے لیے یہ آپریشن کررہی ہے۔ اگر پنجاب حکومت آپریشن میں سنجیدہ ہوتی تو رینجرز اور فوج کے ذریعے آپریشن کرواتی۔