بلوچستان میں بھارتی مداخلت کا الزام مضحکہ خیز ہے، مانی شنکرایئر

January 28, 2016 12:41 pm0 commentsViews: 24

گاندھی کی خارجہ پالیسی اخلاقی اصولوں پر جبکہ مودی کی عملیت پر مبنی ہے، سابق بھارتی سفیر
امن اور ترقی کیلئے پاک بھارت بات چیت کو آگے بڑھانا ہوگا، بھارتی خارجہ پالیسی کے حوالے سے خطاب
کراچی (این این آئی) پاکستان میں بھارت کے سابق سفیر اور راجیہ سبھا کے رکن مانی شنکر ایئر نے کہا ہے کہ بلوچستان میں بھارتی مداخلت کا الزام مضحکہ خیز ہے۔ بلوچستان میں قبائل کے درمیان بے شمار اختلافات ہیں۔ بھارت اس وقت معاشی، سیاسی اور دفاعی استحکام چاہتا ہے۔ گاندھی کی خارجہ پالیسی اخلاقی اصولوں پر مبنی تھی جبکہ نریندر مودی کی خارجہ پالیسی عملیت پر مبنی ہے۔ میں عدم تشدد کا قائل ہوں لیکن میں اس پوزیشن میں نہیں ہوں کہ تشدد کے رجحان کو روک سکوں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف انٹرنیشنل افیئرز میں بھارت کی خارجہ پالیسی کے حوالے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مانی شنکر نے کہا کہ بھارت دفاعی سازو سامان کی درآمدات میں سب سے آگے ہے۔ پاکستان اور بھارت کو امن اور ترقی کے لئے بات چیت کو آگے بڑھانا ہوگا ورنہ مسائل حل نہیں ہوں گے۔ مشرف دور میں چار نکاتی فارمولا پیش کیا تھا لیکن میری نظر میں وہ نامکمل تھا جس کا اظہار پرائیویٹ ملاقاتوں کے درمیان بھی کیا گیا۔ نواز شریف کے وزیراعظم بننے سے قبل ٹیلی فون کے ذریعے ان سے رابطہ ہوا اور چار نکات کے متعلق پوچھا تھا لیکن ان کا جواب تھا وہ اس سے متعلق نہیں جانتے ہیں۔