مقابلے میں زخمی ملزمان کے اہلخانہ کا پولیس کے خلاف احتجاج

January 28, 2016 12:53 pm0 commentsViews: 31

شیر شاہ پولیس نے جعلی مقابلے میں فرید اور ذاکر کو فائرنگ کرکے زخمی کیا، مشتعل اہلخانہ کا الزام
ایس ایس پی ویسٹ غلام اظفر مہر نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقاتی ٹیم تشکیل دیدی
کراچی (کرائم رپورٹر) شیر شاہ پولیس کے مبینہ مقابلے میں زخمی ہونے والے ملزمان کے اہل خانہ نے جناح اسپتال کے باہر پولیس کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے الزام لگایا ہے کہ پولیس نے جعلی پولیس مقابلے میں فائرنگ کرکے زخمی کیا ہے،ایس ایس پی ویسٹ نے ایس پی سائٹ کی سربراہی میں تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی۔ تفصیلات کے مطابق شیرشاہ پولیس نے شیرشاہ موڑ کے قریب مبینہ مقابلے کے بعد زخمی حالت میں دو مبینہ ملزمان فرید اور ذاکر حسین کو گرفتار کرکے قبضے سے 2 پستول،2 موبائل فونز اور ایک موٹر سائیکل برآمد کرنے کا دعویٰ کیا، ابتدائی طور پر زخمیوںکو پہلے عباسی شہید اور بعدازاں جناح اسپتال منتقل کیا،بعدازاں دونوں مبینہ ملزمان کے اہل خانہ اور علاقہ مکینوں بھی اسپتال پہنچ گئے،جہاں مشتعل اہل خانہ اور علاقہ مکینوں نے پولیس کے خلاف احتجاج شروع کردیا ،جہاں مبینہ ملزم فرید کے بھائی شفیق نے بتایا ہے کہ ہم لیاری کے علاقے شاہ بیگ لین کے رہائشی ہیں، میرا بھائی فرید کوکا کولا کمپنی میں بطور ڈرائیور کام کرتاہے اور ذاکر حسین کوکا کولا کمپنی میں لوڈنگ کا کام کرتا ہے ، یہ دونوں کمپنی سے چھٹی ہونے کے بعد موٹر سائیکل پر گھر آنے کیلئے نکلے تھے کہ شیر شاہ موڑ کے قریب پولیس نے ان دونوں پر فائرنگ کردی ، اور میربھائی فرید اور ذاکر حسین زخمی ہوگئے،شفیق کا کہنا تھاکہ بھائی فرید اور ذاکر کے پاس سے کوئی اسلحہ نہیں ملا ہے ، اس مقابلے کی مکمل تحقیقات ہونی چاہئے اور ہمیں انصاف فراہم کیا جائے ،دوسری جانب ایس ایچ او غلام رسول راجپرکا دعویٰ ہے کہ 15 مدد گار سے اطلاع موصول ہوئی تھی کہ مذکورہ مقام پر مسلح ملزمان اسلحہ کے زور پر لوٹ مار کررہے ہیں اطلاع ملتے ہی اے ایس آئی شبیر پولیس پارٹی کے ہمراہ مذکورہ مقام پر پہنچے اور ایک موٹر سائیکل پر سوار دو مشکوک افراد کو رکنے کا اشارہ کیا تو ملزمان نے پولیس پارٹی پر اندھا دھند فائرنگ شروع کردی ، پولیس کی جوابی فائرنگ سے دونوں ملزمان فرید اور ذاکر حسین کو زخمی حالت میں گرفتار کرکے قبضے سے اسلحہ برآمد کیا ہے ،تاہم پولیس ملزمان سے مزید تفتیش کررہی ہے ، جبکہ ایس ایس پی ویسٹ غلام اظفر مہیسر نے واقعہ کا فوری نوٹس لیتے ہوئے ایس پی سائٹ ساجد سدوزئی کی سربراہی میں تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے،جو گزشتہ روز میں مذکورہ واقعے کی رپورٹ پیش کریگی۔