محکمہ داخلہ اور تعلیم سیکورٹی اقدامات میں ناکام ہو چکے، خواجہ اظہار

January 29, 2016 4:54 pm0 commentsViews: 29

آرمی پبلک اسکول پر حملے کے بعد سندھ میں کسی ایک اسکول کی بھی بائونڈری وال نہیں بنائی گئی
تعلیمی اداروں کو سیکورٹی بڑھانے کے نام پر دھمکیاں دی جا رہی ہیں، میڈیا سے گفتگو
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن نے کہا ہے کہ حکومت سندھ کی جانب سے تعلیمی اداروں کی سکیورٹی کے لیے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے ہیں ۔اسکولوں کی سکیورٹی انتہائی خستہ حال ہے ۔ محکمہ داخلہ اور محکمہ تعلیم دونوں تعلیمی اداروں کی سیکورٹی میں ناکام ہو چکے ہیں۔جمعرات کو سندھ اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے تعلیم کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ آرمی پبلک اسکول پشاور پر حملے کے بعد سندھ میں کسی ایک اسکول کی بھی باؤنڈری وال نہیں بنائی گئی ہے ۔سندھ حکومت سب کو اسلحہ دینے کے بات کررہی ہے تو پھر آپریشن کا کیا فائدہ ہوگا ؟انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی آئین پاکستان کی خلاف ورزی کررہی ہے عام آدمی کو کوئی تحفظ نہیں ہے۔ تعلیمی اداروں کو سیکورٹی بڑھانے کے نام پر دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس سمیت حکومت کے کسی ادارے نے تعلیمی اداروں کے لوگوں سے کوئی ملاقات نہیں کی۔