حکومت کی پی آئی اے ملازمین کو مذاکرات کی پیشکش

January 29, 2016 5:25 pm0 commentsViews: 25

آج ایوی ایشن ڈویژن کے سیکریٹری سے جوائنٹ ایکشن کمیٹی ملاقات میں اپنے مطالبات پیش کرے گی
جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چند رہنمائوں نے ممکنہ گرفتاری کے خوف سے ضمانت قبل از گرفتار کروالی
کراچی (اسٹاف رپورٹر)کراچی میں قومی ائیرلائن کی مجوزہ نجکاری کے خلاف احتجاج کرنے والے ملازمین کو حکومت نے مذاکرات کی پیشکش کردی ہے۔ ممکنہ گرفتاریوں سے بچنے کے لئے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کیچیئرمین اور ڈپٹی کنوینر نے ضمانتیں کروالیں ۔ پی آئی اے ہیڈآفس میں قومی ائیر لائن کی ممکنہ نجکاری کے خلاف احتجاج جمعرات کو بھی جاری رہا ۔ ملازمین نے ہیڈآفس کے مرکزی گیٹ کو تالہ لگا رکھا ہے جبکہ پی آئی اے کے پکنگ دفاتر بھی بند ہیں ۔ ادھر پی آئی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کو حکومت کی جانب سے پہلی بار باضابطہ مذاکرات کی پیش کش کردی گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق مذاکرات کی دعوت سیکریٹری ایوی ایشن ڈویژن عرفان الہی نے دی ۔ مذاکرات 29جنوری کو ہوں گے تاہم ملازمین کا احتجاج جاری ہے جبکہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چند رہنمائوں نے ممکنہ گرفتاری کے خوف سے ضمانت قبل از گرفتاری کروالی ۔ ضمانت لینے والوں میں چیئرمینسہیل بلوچ اور ڈپٹی کنوینر ڈاکٹر انجم جوائنٹ ایکشن کمیٹی شامل ہیں ۔ ملازمین نے دو فروری تک مطالبات کی عدم منظوری پر فضائی آپریشن ملتوی کرنے کا اعلان کررکھا ہے ۔