پنجاب میں مینڈیٹ تسلیم نہیں کیا جارہا،بلاول بھٹو

January 30, 2016 3:49 pm0 commentsViews: 28

پیپلز پارٹی کے خلاف انتقامی کارروائیوں اور ہتھکنڈوں کی مذمت کرتے ہیں
90کی دہائی والی سیاست دہرانا بڑی غلطی ہوگی، مخدوم احمد محمود سے گفتگو
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پنجاب انتظامیہ کی جانب سے جنوبی پنجاب میں پیپلزپارٹی کا مینڈیٹ چرانے کے لیے جاری انتقامی کارروائیوں اور ہتھکنڈوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ اگر جنوبی پنجاب میں پارٹی کا مینڈیت تسلیم نہیں کیا گیا تو پارٹی کے پاس تمام آپشنز کھلے ہونگے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے صدر مخدوم احمد محمود سے ٹیلیفون پر بات چیت کرتے ہوئے کیا، مخدوم احمد محمود نے چیئرمین کو شکایت کی کہ پنجاب حکومت، انتظامیہ اورپولیس نے نو منتخب چیئرمینز اور کونسلرزکے خلاف انتقامی کارروائیوں کی مہم شروع کردی ہے اور پنجاب کے حکمران ہمارے پارٹی چیئرمینز اور کونسلرز پر پارٹی سے استعفیٰ دینے کے لیے دبائو ڈال رہے ہیں، بلاول بھٹو زرداری نے پنجاب اور خصوصی طور پر جنوبی پنجاب میںپارٹی کے نو منتخب چیئرمینز اور کونسلرز کے خلاف انتقامی کارروائیوں کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے پارٹی رہنمائوں اور کارکنان پر زور دیا ہے وہ نواز لیگ کے ان ہتھکنڈوں کے سامنے چٹان کی طرح ڈٹے رہیں، بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ نوازلیگ کی جانب سے پارٹی رہنمائوں اور جیالوں کے خلاف اس طرح کی ظالمانہ اور انتقامی کارروایاں نئی بات نہیں، پارٹی نے ماضی میں بھی انتہائی ظالمانہ صورتحال کا مقابلہ کیا ہے اور ہمیشہ متحد اور بے خوف بن کر ایسی تمام کوششوں کو ناکام بنایا ہے، پیپلزپارٹی کے چیئرمین نے وزیراعظم نواز شریف سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ 90 والی سیاست کو دہرانہ آپ کی بڑی غلطی ہوگی، انہوں نے خبردار کیا کہ وہ اس طرح کی کارروائیاں بند کریں، بصورت دیگر ان کا مینڈیٹ بھی سوالیہ بن جائے گا۔