ٹھٹھہ کی سیاسی و سماجی شخصیات کا بلدیاتی ایکٹ پر عملدرآمد کا مطالبہ ۔ ٹھٹھہ کی مزید خبریں

January 30, 2016 4:17 pm0 commentsViews: 26

افسران کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے سندھ میں تعلیم اور صحت کا بحران ہے
حکومت عوام کو انصاف دلانے میں کردار ادا کرے، ایس پی او کے سیمینار سے مقررین کا خطاب
ٹھٹھہ(نمائندہ آغاز)فریڈم آف انفارمیشن 2006پر عملدر آمد نہ ہو نے پر ٹھٹھہ کی سیا سی سما جی حلقوں نے تشویش کا اظہا ر کر کے فوری طور پر بلدیا تی ایکٹ پر عمل کر نے کا مطا لبہ کیا ہے ، سماجی تنظیم ایس پی او کے زیر اہتمام سیمینار کا انعقا د کیا گیا ۔ جس میں ن لیگ کے ضلع صدر حنیف میمن ، ایس پی او کی رحیما ں پنھور ،خدا بخش بھرا نی ، الماس کھٹی ، بختا ور لا شاری اور دیگر شرکا ء نے خطا ب کرتے ہو ئے کہا کہ سرکاری اداروں میں آمریت کا راج قا ئم ہے ، درخواست گذار اگر انصاف کے لیے سرکا ری افسران کے پا س جا تا ہے تو اسے نا روا سلوک کر کے واپس کیا جا تا ہے ، کا موروں اور افسران کی ٹیبل پر بڑی سا لو ں کی درخواستوں پر کوئی نوٹس نہیں لیا جا تا ہے ، البتہ درخواست گذار کو قصوروار ٹھرا یا جا تا ہے افسران کی غلط پا لیسیوں کی وجہ سے سندھ کی تعلیم اور صحت بحران کا شکا ر ہیں، حکومت کو چا ہئے کہ فریڈم آف انفارمیشن ایکٹ پر عملدر آمد کراکے سندھ کے عوام کو انصا ف دلانے میں اپنا کر دار ادا کر یں،خا ص کر کے نئے بلدیاتی منتخب نمائندوں کو عوام کے مسا ئل کے حل کر نے کے لیے فریڈم آف انفارمیشن ایکٹ کی معلومات دینا وقت کی ضرورت ہے ، اس موقع پر نسیم میمن ، گلاب شا ہ ، ریا ض جیلانی اور دیگر نے خطاب کیا ۔

ٹھٹھہ میں تھیلیسمیا بیماری کی روک تھام کیلئے سینٹر کھولنے کا مطالبہ
ٹھٹھہ(نما ئندہ آغاز)تھیلسمیا کی بیماری کا سینٹر کھولنے کے لیے ٹھٹھہ کے درجنوں متا ثر والدین کا پریس کلب کے سا منے سخت احتجاج ، تھیلسمیاکی بیماری میں مبتلا بچوں کے والدین ایم مظفر شیخ اور ممتا ز شیخ اورد یگر نے پریس کلب ٹھٹھہ کے سا منے پلے کا رڈ اور بینراٹھا کر ٹھٹھہ کی تھیلسمیا کی بیماری کی روک تھام کے لیے سینٹر کھو لنے کا مطا لبہ کیا ہے ، متا ثر وا لدین نے حکو متی بے بسی پر احتجاج کر تے ہو ئے بتا یا ہے کہ ٹھٹھہ ضلع میں سینکڑو ں بچے تھیلسمیا کی بیماری میں مبتلا ہیں لیکن حکو متی سطح پر ان بچوں کا کو ئی علاج نہیں ہو تا ہے ڈاکٹر کہتے ہیں کہ ایک بچے کے علاج کے لیے چالیس لا کھ رو پے کی ضرورت پڑتی ہے ، جبکہ پرا ئیوٹ اسپتال اور سینٹر کی انتظا میہ غریب بچوں کی والدین سے بھاری فیس لیکر خون دیتے ہیں اور ہر پندرہ رو ز میں خو ن کی بو تلیں چڑہا نا والدین کے بس میں نہیں ہے انھوں نے حکو مت سندھ سے مطا لبہ کیا ہے کہ ٹھٹھہ میں تھیلسمیاں کا سینٹر کھو لا جا ئے تا کہ غریب بچوں کا علاج ہو سکے۔

ٹھٹھہ میں رینجرز کا آپریشن، گھر گھر تلاشی میں2 افراد گرفتار
علاقہ مکینوں کا رینجرز کی جانب سے عورتوں اور بچوں پر مبینہ تشدد کرنے کا الزام
حکومت سندھ سے کارروائی کا نوٹس لیکر گرفتار افراد کو فوری آزاد کرنے کا مطالبہ
ٹھٹھہ(نمائندہ آغاز)رینجرز کا چھا پہ ، گھر گھر تلاشی، عورتوں اور بچو ں پر مبینہ تشدد دو افراد گرفتار ، متاثرین کا سخت احتجاج ، گرفتار افراد کو آزاد کر نے کا مطا لبہ ۔تفصیلات کے مطا بق ۔ رینجرز اہلکار دس گا ڑیوں میں سوار ہو کر ٹھٹھہ کے قریب غلام اللہ کے نوا حی گا وں الھڈنہ سوپار پر چڑہا ئی کر کے گھر گھر تلاشی لی اور عورتوں پر مبینہ تشدد کر کے متعد عورتوں کو زخمی کر کے پانچ افراد کو گرفتار کر کے ا پنے ساتھ لے گئی ہے ۔رینجرز کی کا روا ئی کے خلاف متا ثر گائوں کے افراد نے سخت احتجاج کیا ہے، محمد حسن سوپا ر اور دیگر نے صحا فیوں کو بتا یا ہے کہ رینجر ز کی کارروائی بلا جوا ز ہے ، رینجرز کے اہلکا روں نے عورتوں پر اندھا دہند تشدد شروع کر دیا ، جس با عث گا وں کی متعد عورتیں زخمی ہو گئی ہیں ، جبکہ پا نچ افراد کی گرفتاری کے بعد رینجرز تین افراد کو چھوڑ کر دو افراد محمد حسن اور گل محمد سو پار کو اپنے ساتھ لے گئی ہے ۔انھوں نے خدشاتظاہر کیا کہ گرفتار افراد کو مقا بلہ دکھا کر مارانہ جا ئے ۔ اس لیے حکو مت سندھ سے مطا لبہ ہے رینجرز کی کارروائی کا نوٹس لیکر گرفتار دو افراد کو آزاد کیا جا ئے ۔