عوام سے پھر ہاتھ ہوگیا، پیٹرولیم مصنوعات 5روپے سستی، ٹیکس ڈبل

February 1, 2016 4:01 pm0 commentsViews: 28

پیٹرول پر فی لیٹر14.48روپے،مٹی کے تیل پر 10.4روپے، لائٹ ڈیزل پر 9.63روپے اور ہائی اوکٹین 18.57روپے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل پر20.57 روپے ٹیکس وصول کیا گیا
ایف بی آر نے نوٹیفکیشن جاری کردیا، پاکستان دنیا بھر میں سب سے زیادہ پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس وصول کرنے والا ملک بن گیا
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت نے عوام کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں5 روپے فی لیٹر کمی کا جھانسہ دیکر پیٹرولیم مصنوعات پر وصول کیا جانے والا سیلز ٹیکس تقریباً دگنا کر دیا۔ ایف بی آر نے فکسڈ ٹیکس کا نوٹیفکیشن جاری کرکے پیٹرول پر سیلز ٹیکس 21 فیصد سے بڑھا کر 35 فیصد، مٹی کے تیل پر 22 فیصد سے بڑھا کر 41 فیصد، لائٹ ڈیزل پر24 فیصد سے بڑھا کر51 فیصد ، ہائی اوکٹین پر23.5فیصد سے بڑھا کر 46فیصد جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل پر51 فیصد سے بڑھا کر93 فیصد کر دیا، پیٹرولیم مصنوعات پر10 تا13 فیصد پیٹرولیم ڈیولپمنٹ لیوی اس کے علاوہ وصول کی جا رہی ہے۔ سیلز ٹیکس میں اضافے سے پاکستان دنیا بھر میں پیٹرولیم مصنوعات پر سب سے زیادہ ٹیکس وصول کرنے والا ملک بن گیا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیر اعظم نواز شریف نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں جہاں ایک جانب5 روپے کمی کا اعلان کیا وہیں دوسری جانب فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے بھی پیٹرولیم مصنوعات پر فکسڈ سیلز ٹیکس عائد کرنے کا نیا نوٹیفکیشن جارٍی کر دیا جس کے مطابق پیٹرول پر فی لیٹر14.48 روپے مٹی کے تیل پر 10.4 روپے، لائٹ ڈیزل 9.63 روپے، ہائی اوکٹین پر 18.57 روپے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل پر20.57 جنرل سیلز ٹیکس وصول کیا جائے گا۔