کل سے پی آئی اے کا فلائٹ آپریشن بند کرنیکا اعلان

February 1, 2016 4:04 pm0 commentsViews: 28

حکومت قومی اسمبلی میں پی آئی اے کی نجکاری سے متعلق بل واپس لے اور جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے عہدیداروں کیخلاف مقدمات واپس ختم کئے جائیں
مذاکرات کیلئے ہمارے دروازے کھلے ہیں، اگر حکومت سے کوئی معاہدہ بھی کرنا ہو تو وہ تحریری ہوگا، جوائنٹ ایکشن کمیشن
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پی آئی اے کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے اعلان کر دہ احتجاج پر عملد آمد کرتے ہوئے 2 فروری بروز منگل سے فلائٹ آپریشن بھی بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پی آئی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ہنگامی اجلاس کے دوران فیصلہ کیا گیا ہے کہ پی آئی ہے کی ممکنہ نجکاری کسی بھی صورت قابل قبول نہیں اور اپنے مطالبات پر قائم رہتے ہوئے منگل کی صبح7 بجے سے فلائٹ آپریشن بند کر دیا جائے گا، اجلاس میں کہا گیا ہے کہ حکومت قومی اسمبلی میں پی آئی اے کی نجکاری سے متعلق بل واپس لے اور جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ذمہ داران پر قائم مقدمات فوری ختم کئے جائیں۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا کہنا تھا کہ اگر حکومت سے کوئی بھی معاہدہ ہوگا تو وہ تحریری شکل میں ہوگا تاہم کمیٹی کے ساتھ جس نے بھی مذاکرات کرنا ہیں تو ہمارے دروازے کھلے ہیں۔ ایکشن کمیٹی کا کہنا تھا کہ اگر حکومت ریلوے کو خواجہ سعد رفیق جیسا وزیر دے سکتی ہے تو پی آئی اے میں کیوں نہیں دے سکتی۔ پی آئی اے کو بھی خواجہ سعد رفیق جیسا وزیر دیں اور پھر دیکھیں گے یہ ادارہ ایک سال میں کس طرح اپنے پیروں پر کھڑا ہو تا ہے۔ قبل ازیں پی آئی اے کے ملازمین کے احتجاج کے آخری مرحلے میں فضائی آپریشن معطل کرنے سے روکنے کیلئے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کو منانے کی سیکریٹری ایوی ایشن عرفان الٰہی کی جانب سے اتوار کے روز بھی کوشش ناکام ہوگئی۔ سیکریٹری ایوی ایشن عرفان الٰہی نے اتوار کو جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے عہدیداران کو فون کرکے یقین دہانی کرائی کہ ادارے سے کسی ملازم کو نہیں نکالا جائے گا اور 6 ماہ تک کوئی نجکاری نہیں ہوگی، تاہم6 ماہ کے بعد کسی بھی قسم کی یقین دہانی کرانے سے معذرت کر لی۔ جس پر جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چیئر مین کیپٹن سہیل بلوچ نے بھی تالا بندی ختم کرنے اور منگل سے فضائی آپریشن بند کرنے کے فیصلے سے دستبردار ہونے سے معذرت کرلی۔