پی آئی اے ملازمین کا مسئلہ وزیراعظم مہربان آدمی ہیں ان سے بات کرونگا، وزیراعلیٰ سندھ

February 3, 2016 2:05 pm0 commentsViews: 21

احتجاج کے دوران ہلاکتوں پر دکھ ہوا ہے
ملازمین کے مطالبات کی منظوری کی کوشش کریں گے
لاشیں لے کر سڑکوں پر آنا درست نہیں ہے
قائم علی شاہ کی پی آئی اے کے وفد سے بات چیت
کراچی( اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے منگل کو پی ائی اے کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے وفد کو وزیراعلیٰ ہائوس بلا کر ان سے آج رونما ہونیوالے واقعہ کی تفصیلات معلوم کیں اور اس موقع پر ایکشن کمیٹی کے چیئرمین سہیل بلوچ کی سربراہی میں6 رکنی وفد سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ احتجاج کے دوران فائرنگ سے ہونیوالے جانی نقصان پر دکھ ہوا ہے‘ انہوں نے کہا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ امن و امان کا مسئلہ خراب نہ ہو ‘لہٰذا لاش لے کر سڑکوں پر آنا مناسب نہیں ہوگا‘ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ اپنے مطالبات ہمیں دیں میں وزیراعظم سے بات کرتا ہوں وہ مہربان آدمی ہیں یقین ہے کہ آپ کے مسائل حل کریں گے ‘ انہوں نے کہا کہ پی آئی اے قومی ادارہ ہے اس کا ہیڈ کوارٹر وزیراعلیٰ سندھ کو تمام صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ان کے تین لوگوں کو ہدایت اللہ ‘فاروق اور ڈاکٹر عمران کو حراست میں لیا گیا ہے‘ وزیراعلیٰ سندھ نے ایکشن کمیٹی کے احتجاج کے دوران فائرنگ سے جاں بحق ہونیوالے دو افراد کیلئے فی کس20,20 لاکھ روپے اور زخمیوں کیلئے فی کس دو لاکھ روپے کی مالی امداد کا اعلان کیا‘ انہوں نے شدید زخمیوں کو آغا خان اسپتال منتقل کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ ان کے علاج معالجے کے تمام اخراجات سندھ حکومت برداشت کریگی‘ بعد ازاںوزیراعلیٰ سندھ نے پی آئی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے احتجاج کے حوالے سے رونما ہونیوالے واقعہ کے بارے میں وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق سے ٹیلی فون پر بات چیت کی۔