سندھ پولیس میں 2کروڑ روپے کی خرد برد کا انکشاف

February 5, 2016 1:33 pm0 commentsViews: 20

رقم پولیس کے مختلف دفاتر میں تحقیقات کے نام پر جعلی کاغذات بنوا کر خرچ کی گئی
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) محکمہ داخلہ سندھ کے ماتحت پولیس کے مختلف دفاتر میں 2 کروڑ سے زائد رقم خلاف ضابطہ استعمال ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ پولیس کے مختلف دفاتر میں تحقیقات کے نام پر 2 کروڑ 19 لاکھ 50 ہزار کی رقم خرچ کی گئی جس کے متعلق جعلی کاغذات بنائے گئے، ذرائع کے مطابق ایس ایس پی انوسٹی گیشن غربی رینج کراچی میں 12 لاکھ80 ہزار سال2013ء میں خرچ کئے گئے ایس ایس پی انوسٹی گیشن بدین میں 40 لاکھ 70روپے، ایس ایس پی عمر کوٹ 30 لاکھ 63 ہزار ، کراچی انوسٹی گیشن زون ون، ساؤتھ زون، ایس ایس پی تھر، مٹھی، ایس ایس پی قمبر شہداد کوٹ، کشمور کندھ کوٹ، حیدر آباد اور ٹھٹھہ کے ایس ایس پی نے انوسٹی گیشن پر2 کروڑ 19 لاکھ 50 ہزار روپے خرچ کئے جس کے لئے جعلی بلز اور واؤچر تیار کئے گئے۔ آڈٹ ذرائع کے مطابق جو دستاویزات دئیے گئے وہ قابل اعتبار نہیں تھے جبکہ انوسٹی گیشن کے بعد کئی کیسز میں واؤچر، بلز اور ایف آئی آرز کی کاپیاں نہیں دی گئیں جس سے خرچ کی گئی رقم کی تصدیق نہیں ہو سکی، آڈٹ ذرائع کے مطابق دستاویزات محکمہ آڈٹ کو دینے کیلئے کئی بار تحریری طور پر یاددہانی کرائی گئی لیکن اس کا کوئی جواب نہیں دیا گیا۔ محکمہ آڈٹ کے مطابق سالانہ رپورٹ میں تمام رقم سے متعلق تفصیلات شامل کی گئی ہیں اب اس کے متعلق پبلک اکاؤنٹس کمیٹی سندھ میں ہی جائزہ لیا جائے گا۔