غیرملکی فنڈنگ لینے والے گرفتار ہونگے خفیہ سروے کرانے کا فیصلہ کرلیا گیا

February 5, 2016 1:36 pm0 commentsViews: 23

پاکستان میں غیرملکی خفیہ ایجنسیوں کیلئے کام کرنیوالوں کیخلاف آئندہ ہفتے سے ملک گیر آپریشن کی تیاریاں شروع کردی گئیں
پاکستان میں بیرون ممالک سے فنڈ لے کر دہشت گردی کو فروغ دینے والے عناصر اور ان کے سہولت کاروں کے بارے میں ملک بھر میں انٹیلی جنس بنیادوں پرخفیہ سروے کرایا جائے گا، شواہد ملنے پر گرفتاریاں ہوں گی
پاکستان کے خفیہ سول اور عسکری اداروں نے ایسے عناصر کی فہرستیں تیار کرلی ہیں جو غیرملکی خفیہ ایجنسیوں کیلئے کام کررہے ہیں، ان عناصر کے خلاف پورے ملک میں آپریشن ہوگاجو کئی ہفتے جاری رہنے کا امکان ہے، ذرائع
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) پاکستان میں غیر ملکی فنڈنگ لینے اور حاصل رقم کو دہشت گردی کیلئے استعمال کرنے والوں کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔ غیر ملکی فنڈنگ لینے والے گرفتار ہوں گے ان کے خلاف خفیہ سروے شروع کردیا گیا ے شواہد ملنے کے بعد بڑے پیمانے پر گرفتاریاں ہوں گی ذرائع کے مطابق شواہد ملنے کے بعد سہولت کاروں کے خلاف آئندہ ہفتے پورے ملک میں آپریشن کلین اپ شروع کر دیا جائے گا، جس کے دوران غیر ملکی خفیہ انٹیلی جنس اداروں کے آلہ کار بنے ہوئے پاکستانیوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ پاکستان کی خفیہ سول و عسکری اداروں کے پاس غیر ملکی اداروں سے ملک کے اندر یا ملک سے باہر نقد یا جنس کی شکل میں مفادات حاصل کرنے والوں کی فہرستیں تیار کر لی ہیں اس میں زندگی کے کم و بیش تمام شعبوں کے افراد شامل ہیں، غیر ملکی خفیہ انٹیلی جنس ایجنسیوں کے کسی بھی طریقے سے معاونت کرنے والے پاکستانی شہریو ں کے خلاف آپریشن کئی ہفتے تک جاری رکھنے کا فیصلہ گیا ہے وزیر اعظم محمد نواز شریف نے غیر ملکی ایجنٹوں کے خلاف آپریشن کی اصولی منظوری دے دی ہے۔ جس کے بعد قومی انٹیلی جنس اداروں نے پہلے دہشت گردی کے واقعات میں غیر ملکی ایجنسیوں کی معاونت کرنے والوں کے خلاف ایکشن شروع کریں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ بیرونی انٹیلی جنس ایجنسیوں سے ملک کے اندر اور باہر کے اکاؤنٹس میں رقوم وصول کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز ایکشن ہوگا علاوہ ازیں وفاق کے اعلیٰ ترین حلقوں میں مشاورت میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ ملک بھر میں انٹیلی جنس بنیادوں پر خفیہ سروے کرایا جائے گا اور اس سروے میں ایسی تنظیموں، گروپس اور اداروں کی نشاندہی کی جائے گی جو بیرون ملک سے فنڈنگ لے کر ملک میں دہشت گردی کو فروغ دے رہے ہیں یا دہشت گردوں کے مالی معاونین کا کردار ادا کر رہے ہیں اور یہ تمام عناصر سہولت کار تصور ہوں گے۔ سروے کیلئے مشترکہ پالیسی و حکمت عملی وفاقی وزارت داخلہ طے کرے گی۔ سروے میں صوبائی حکومتیں، انٹیلی جنس ادارے، سیکورٹی ادارے اورمتعلقہ وفاقی و صوبائی ادارے پالیسی کے مطابق کام کریں گے۔