پولیس نے شادی ہال مالکان سے مک مکا کرلیا، لواحقین مقتولہ پاکیزہ

February 5, 2016 2:15 pm0 commentsViews: 25

ڈی ایس پی، ایس ایچ او اور تحقیقاتی افسر کی جانب سے واقعہ کو حادثہ قرار دینے کیلئے دباؤ ڈالا جارہا ہے
اورنگی میں گھرکے باہر بچوں کا احتجاج، والدین کا ڈی جی رینجرز اور چوہدری نثار سے انصاف کا مطالبہ
کراچی (کرائم رپورٹر)اورنگی ٹاون مقتول بچی پاکیزہ کے گھر کے باہر مختلف اسکولز کے بچوں کا احتجاج پاکیزہ کے والدین، ٹیچرز اور بچوں کا ڈی جی رینجرز اور چودھری نثار سے انصاف کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق اورنگی ٹاون بچی قتل کیس، پولیس واقعے کا رخ موڑنے لگی، پولیس نے مقتول پاکیزہ کے اہل خانہ کو گذشتہ رات تھانے طلب کیا، والد پاکیزہ کا کہنا ہے کہ ہمارے سامنے باری باری3ملازمین کو پیش کیا گیا، والد پاکیزہ پولیس نے کئی روز گذرنے کے بعد بھی میرا بیان نہیں لیا۔ بوفے ڈش رکھنے والے کا کہنا تھا جب اس نے ٹنکی دیکھی تو اس کا ڈھکن بند تھا ویٹر کا کہنا تھا اس نے پانچ بجے غلطی سے ڈھکن کھول دیا تھا جسے بند نہیں کیا الیکٹریشن کا کہنا ہے جب ہال میں بچی گمشدگی کا شور مچا تو میں نے دیکھا ڈھکن کھلا تھا الیکٹریشن نے فوری منیجر کو بلایا اور ٹارچ سے ٹنکی میں تلاش کیا مگر بچی وہاں نہیں تھی ،جب ہم ہال میں آئے تو ڈھکن بند تھا، تالا لگا ہوا تھا اور اس پر قالین موجود تھا، ڈی ایس پی، ایس ایچ او اور تحقیقاتی افسر مسلسل واقعے کو حادثہ قرار دینے کی کوشش کر رہے ہیں، تنویر مراد نامی افسر ہم پر دباو ڈال رہا ہے کہ واقعے کو حادثہ مان لیا جائے، لواحقین کا کہنا ہے کہ پولیس اور ہال مالکان میں مک مکا ہو گیا ہے۔