گاڑیاں چوری اور چھیننے کی وارداتیں کم ہو گئیں سہیل انور سیال

February 5, 2016 2:38 pm0 commentsViews: 21

یکم جولائی تا دسمبر2012 , 1642 موٹر سائیکلیں اور422 کاریں چوری یا چھینی گئیں 1563 برآمد کر لیں
580 لفٹروں کو گرفتار کیا،2008 سے2013 تک 340 مجرموں کو سزائے موت اور1657 کو عمر قید کی سزا ہوئی، اسمبلی میں جواب
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی میں جمعرات کو محکمہ داخلہ سے متعلق وقفہ سوالات تھا ۔ وزیر داخلہ سہیل انور سیال نے متعدد ارکان کے تحریری و ضمنی سوالوں کا جواب دیتے ہوئے بتایا کہ یکم جولائی سے 31 دسمبر 2012ء تک چھ ماہ میں 1642 موٹر سائیکلیں اور 422 کاریں چوری ہوئیں یا چھینی گئیں ۔ ان میں سے 1563 گاڑیاں برآمد کی گئیں اور 580 افراد کو گرفتار کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ 2012 کی نسبت آج صورت حال بہتر ہے ۔ گاڑیاں چوری ہونے یا چھینے جانے کی وارداتیں کم ہو گئی ہیں ۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ 2011 سے 2014 ء تک کینجھر جھیل میں 18 افراد ڈوب کر ہلاک ہوئے ۔ 2014 ء میں حکومت سندھ نے وہاں دفعہ 144 نافذ کر دی اور تیراکی پر پابندی عائد کر دی ۔ حکومت کے دیگر اقدامات کی وجہ سے 2014 کے بعد کوئی ایسا واقعہ رونما نہیں ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ 2008ء سے 2013 ء تک سندھ کی جیلوں میں 340 مجرموں کو سزائے موت اور 1657 کو عمر قید کی سزا ہوئی ۔ 38 مجرموں کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کر دیا گیا ۔ یہ تبدیلی عدالتوں کے ذریعہ ہوتی ہے یا صدر مملکت کو سزا تبدیل کرنے کا اختیار ہے ۔ اس مدت کے دوران صدر مملکت نے کسی کی سزا میں تبدیلی نہیں کی ۔