سندھ میں یکساں نظام صلوٰۃ اور جمعہ کے خطبے پر علماء کرام کا اتفاق

February 5, 2016 2:40 pm0 commentsViews: 38

حتمی فارمولا تیار کرنے کے لئے کمیٹی تشکیل دیدی گئی جس کی سفارشات پر قانو ن سازی کی جائیگی، وفاقی وزیر مذہبی امور
کسی فرقے پر کفر اور کسی کو واجب القتل قرار دینے کا فتویٰ ضابطہ اخلاق کیخلاف ورزی ہوگا، سردار محمد یوسف کا علماء کے اجلاس سے خطاب
کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ میں یکساں نظام صلوٰۃ اور خطبہ جمعہ پر مختلف مکاتب فکر کے علماء نے اتفاق کرلیا ہے ۔کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو حتمی فارمولہ تیار کرے گی۔ کسی فرقے پر کفر اور کسی کو واجب القتل قرار دینے کا فتویٰ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہوگا ۔انبیاء ،صحابہ کرام،اہلبیت عظام اور دیگر مکاتب کے بزرگوں کی توہین پر قانون کے مطابق سخت کارروائی کی جائے گی جبکہ وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف نے اعلان کیا ہے کہ صوبائی کمیٹی کی تیار کردہ سفارشات پر وفاق میں قانون سازی کی جائے گی اور وفاق یکساں نظام صلوٰۃ کے لیے صوبے کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرے گا ۔جمعرات کو نیو سندھ سیکرٹریٹ میں صوبائی وزارت مذہبی امور کے تحت صوبے میں یکساں نظام صلوٰۃ اور خطبے کے حوالے سے علماء اور مختلف مکاتب فکر کے رہنماؤں کا اہم اجلاس وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف کی صدارت میں ہوا ۔اجلاس کی میزبانی صوبائی معاون خصوصی برائے مذہبی اور وزیراعلیٰ سندھ عبدالقیوم سومرونے کی ۔اجلاس میں جے یو آئی کے قاری محمد عثمان ،مولانا عبدالکریم عابد ،جعفریہ الائنس کے علامہ عباس کمیلی ،حیدر کرار نقوی ،مولانا عون محمد نقوی ،جمعیت اہلحدیث کے حافظ محمد سلفی ،مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر عامر تحسین ،جمعیت علماء پاکستان کے قاضی محمد نورانی اور دیگر نے شرکت کی ۔دو گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس میں صوبے میں یکساں نظام صلوٰۃ ،اوقات نماز اور اوقات اذان کے حوالے سے تفصیلی غور و خوص کیا گیا ۔سردار محمد یوسف نے بتایا کہ اسلام آباد میں ایک ہی وقت میں اذان اور نماز کا وقت مقرر کرنے کا فیصلہ مفید رہا ہے اور ہمیں کافی حد اس میں کامیابی ملی ہے ۔