تھر کی صورتحال پر تشویش، وزیراعلیٰ نے عدالتی کمیشن تشکیل دیدیا

February 8, 2016 1:14 pm0 commentsViews: 30

دو رکنی کمیشن مجموعی صورتحال کا جائزہ لے کر15 روز میں رپورٹ وزیراعلیٰ کو پیش کریگا، آج سے کام شروع کردیگا
تھر میں غربت کے خاتمے کیلئے عملی اقدامات کیے، طبی مراکز اور اسپتالوں کو ضروری سازو سامان اور ادویات کا بجٹ دگنا کر دیا ہے، قائم علی شاہ
کراچی(اسٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے ایک دو رکنی عدالتی کمیشن تشکیل دیا ہے جو کہ تھرکی مجموعی صورتحال کا جائزہ لے گا۔ وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے تھر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت نے تھر میں غربت کے خاتمے کے لئے عملی اقدامات کئے ہیں اور تھر میں صحت کی سہولیات کی بہتری ، بنیادی صحت کے مراکز کی اپ گریڈیشن، ڈسپنسریوں او رتعلقہ اسپتالوں کو تمام تر ضروری سازوسامان فراہم کیے گئے ہیں جس سے تعلقہ اسپتالوں میں بہتری آئی ہے اور اسکے ساتھ ساتھ ادویات کے بجٹ کو دگنا کردیا گیا ہے مگر ان تمام اقدامات کے باوجودمیڈیا رپورٹس بتا رہی ہیں کہ شیر خوار بچوں کی اموات میں اضافہ ہے جو کہ میرے لئے پریشان کن ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے تھر میں موجودہ تمام صورتحال پر تحقیقات کرنے کے لئے چیف سیکریٹری سندھ صدیق میمن کو ہدایت کی ہے کہ وہ دو ممبران جسٹس (ر) غلام سرورکورائی اور ریٹائرڈ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ارجن رام پر مشتمل جوڈیشل کمیشن تشکیل دیں۔ جوڈیشل کمیشن بچوں کی اموات کے اسباب اور حکومت کی جانب سے اب تک کئے گئے اقدامات کا جائزہ لے گا اور مزید ضروریات اور اب تک کی حکومتی کاوشوں/پالیسی پر عملدرآمد میں اگر کوئی کمی ہے تو اسکی نشاندہی کرکے 15دن کے اندر اپنی رپورٹ پیش کرے گا۔ جوڈیشل کمیشن پیر سے اپنا کام شرو ع کر یگا تا کہ مقررہ مدت میں اپنی رپورٹ مکمل کر سکے۔