خانہ و مردم شماری میں کسی کو دھاندلی نہیں کرنے دینگے، حسین ہارون

February 8, 2016 1:17 pm0 commentsViews: 22

شفاف طریقے سے کرائی جائے، غیرملکیوں کا علیحدہ اندراج کیاجائے، اجلاس میں فیصلے، سربراہ کراچی عوامی اتحاد
کراچی( پ ر)کراچی عوامی اتحاد کے سرپرست اعلیٰ حسین عبداللہ ہارون کی سربراہی میںفیصلہ کیا گیاہے کہ سندھ میں شفاف بنیادوں پر خانہ اورمردم شماری کرائی جائے اوراس عمل میں کسی کودھاندلی نہیں کرنے دی جائے گی،پارٹی نے وفاقی حکومت سے یہ بھی مطالبہ کیاکہ جو غیر ملکی سندھ میں آبادہیں ان کا علیحدہ اندراج کیا جائے۔اتوار کو معروف و سنیئرسیاستدان کی رہائش گاہ میں سندھ کی سیاسی، سماجی، علمی، ادبی تنظیموں اور شخصیات کا اہم اجلاس ہوا، جس میں مارچ2016میں ہونے والی مردم شماری پر تفصیلی غور و خوض کیا گیا اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے حسین عبداللہ ہارون نے کہا کہ نادرا کے ذریعے غیر ملکیوں کو پیسوں کے عوض جو شہریت دی گئی ہے اسے منسوخ کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان کو قومی زبان کی حیثیت حاصل ہے تو پھر اسے مادری زبانوں کے کالم میں کیوں ڈالا گیا ہے سندھ میں رہنے والے مختلف قومیتوں کے لوگ اپنی مادری زبان سندھی لکھوائیں۔سندھ حکومت کو جو مردم شماری کے انتظامات کرنے چاہئے تھے ابھی تک انہوں نے کچھ نہیں کیا ہے۔اجلاس میں ایم پی اے شفیع جاموٹ،جئے سندھ محاذ کے چیئرمین ریاض چانڈیو، کے آر سی کے مرکزی رہنما اختر ترک کچھی ،پاکستان ورکرز پارٹی کے یوسف مستی ،عثمان بلوچ،سندھ ڈیموکرٹیک فورم کے پروفیسر مشتاق میرانی، شفیق موسوی، اسلم بلوچ، نسیم شاہانی،سہیل ابڑو،موہن لعل میشوری ،پیٹر برنارڈودیگر رہنمائوں نے شرکت کی۔