گورنر خیبر پختونخوا سیاست میں آنے کیلئے عہدے سے مستعفی ہو گئے

February 9, 2016 12:39 pm0 commentsViews: 39

سردار مہتاب نے اپنی خواہش ظاہر کرکے وزیراعظم کو استعفیٰ پیش کر دیا، 2 سال قبل قانونی طور پر عہدے چھوڑنا ضروری تھا
نئے گورنر کیلئے5 ناموں پر غور شروع، گورنری کا تاج جنرل (ر) صلاح الدین ترمذی کے سر سجنے کا امکان
اسلام آباد( این این آئی) گورنر خیبر پختونخوا سردار مہتاب احمد خان پارلیمانی سیاست میں حصہ لینے کیلئے مستعفی ہوگئے ہیں جبکہ صدر ممنون حسین نے وزیر اعظم کی سمری پر ان کا استعفیٰ منظور کرلیا ہے نئے گورنر خیبر پختونخوا کیلئے پانچ ناموں پر غور شروع کر دیا گیا ہے۔ جبکہ جنرل ( ر) صلاح الدین ترمذی کی اپوزیشن مستحکم، ذرائع کے مطابق خیبر پختونخوا کے گورنر سردار مہتاب احمد نے رضا کارانہ طورپر استعفی دے دیا، استعفیٰ پانچ روز قبل وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کے بعد تحریری طور پر پیش کیا گیا ہے جس کی وزیر اعظم نواز شریف نے منظوری دے دی ہے سردار مہتاب احمد خان نے چند روز قبل وزیر اعظم سے ملاقات میں مستعفی ہونے کی پیشکش کی تھی اور موقف اختیار کیا تھا انہیں اگلے عام انتخابات میں حصہ لینے کیلئے استعفیٰ دینا پڑے گا اس کے بغیر وہ پارلیمانی سیاست اور اپنے حلقے کی سیاست نہیں کر سکتے الیکشن میں حصہ لینے کیلئے کسی سابق گورنر کے عہدہ چھوڑنے کی مدت کم از کم دو سال ہے۔ استعفیٰ کے بعد اب مسلم لیگ ن کی صوبائی صدر پیر صابر شاہ، اقبال ظفر جھگڑا، انجینئر امیر مقام، جنرل ریٹائرڈ ( ر) صلاح الدین ترمذی اور لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ طارق احسن کے نام نئے گورنر خیبر پختونخوا کیلئے زیر غور ہیں۔ تاہم جنرل ترمذی کی پوزیشن مستحکم ہے اور گورنر کا تاج ان کے سر سجنے کا امکان ہے۔