سندھ میں، تحقیقاتی اداروں کو پابند بنانے کیلئے قانون سازی کا فیصلہ

February 9, 2016 12:43 pm0 commentsViews: 33

خیبر پختوانخوا طرز کے قانون کو سندھ اسمبلی سے منظور کرایا جائیگا اس کے تحت ایف آئی اے، نیب اور رینجرز کسی رکن اسمبلی کو گرفتاری سے قبل وزیراعلیٰ اور اسپیکر سے اجازت لینے کے پابند ہونگے ،ذرائع
وزیراعلیٰ کے قانونی مشیروں سے طویل صلاح و مشورے ،منظوری کے لئے بل کی تیاری شروع ، قانون سے حکومتی رکن اسمبلی کو ضمانت کا موقع اور حزب اختلاف کی فوری گرفتاری ہوگی ، قانونی ماہرین
کراچی( آن لائن، آئی این پی) حکومت سندھ نے خیبر پختونخوا حکومت کے قانون کی طرز پر سندھ میں نیا قانون سندھ اسمبلی سے منظور کرانے کا فیصلہ کرلیا ہے جس کے تحت نیب، ایف آئی اے رینجرز اور دیگر تحقیقاتی اداروں کو کسی بھی رکن سندھ اسمبلی کی گرفتاری سے قبل اسپیکر سندھ اسمبلی اور وزیر اعلیٰ سندھ سے لازمی طور پر اجازت لینے کا پابند بنایا جائے گا اس ضمن میں پیر کے روز قائم مقام سیکریٹری قانون محمد اسلم شیخ، مشیر قانون مرتضیٰ وہاب، ایڈووکیٹ جنرل سندھ اور دیگر قانونی مشیروں سے وزیر اعلیٰ سندھ نے طویل صلاح و مشورے کئے ذرائع نے بتایا کہ ایک بل حکومت سندھ تیار کر رہی ہے جو سندھ اسمبلی سے منظور کرایا جائے گا جس میں تمام وفاقی اداروں کو پابند کیا جائے گا کہ وہ کسی رکن سندھ اسمبلی کو گرفتار کرنے سے قبل اسپیکر سندھ اسمبلی اور وزیر اعلیٰ سندھ سے تحریری اجازت لیں، قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ امتیازی قانون ہے کیونکہ وزیر اعلیٰ اور اسپیکر اپنے رکن کی منظوری دیر سے دیں گے تا کہ وہ ضمانت کروالیں اور حزب اختلاف کے رکن کی منظوری فوری طور پر دیں گے تا کہ وہ ضمانت بھی نہ کرا سکیں۔