حکومت کو بلیک میل کرنا نہیں چاہتے مذاکرات کیلئے تیار ہیں، سہیل بلوچ

February 9, 2016 1:21 pm0 commentsViews: 31

مذاکرات کیلئے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار اور وزیراعلیٰ پنجاب کو مذاکرات کیلئے بھیجا جائے ،چیئرمین جوائنٹ ایکشن کمیٹی
قوم کو مشکل سے نکالنے کیلئے کوشش کررہے ہیں ،پی آئی اے کو نجکاری سے بچانے کیلئے احتجاج کے علاوہ کوئی راستہ باقی نہیں تھا
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پی آئی اے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چیئرمین کیپٹن سہیل بلوچ نے کہا ہے کہ حکومت سے مذاکرات کیلئے تیار ہیں‘ا نہوں نے وزیراعظم کے تائید کردہ نمائندسے بھی بات چیت کا عندیہ دیا تاہم مذاکرات کیلئے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان اور وزیراعلیٰ پنجاب کا نام تجویز کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف سے درخواست کی گئی کہ کوئی بھروسے والا شخص مذاکرات کیلئے بھیجیں‘ حکومت کو بلیک میل نہیں کرنا چاہتے‘ حکومت سے صرف پی آئی کی مجوزہ نجکاری پر اختلاف ہے‘ پیر کو احتجاجی جلسہ کے دوران پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن سہیل بلوچ نے بتایا کہ ہمارے اغواء کئے گئے ساتھیوں کو پیر کی صبح ناگن چورنگی پر چھوڑ دیا گیا ہے‘ انہوں نے کہا کہ ہمارے دروازے مذاکرات کیلئے کھلے ہیں بہت جلد قوم کو اس مشکل سے نکالنے کی کوشش کرہے ہیں آج صبح ڈیلی ویجز ملازمین کو داخلے سے روکنے کی مذمت کرتے ہیں‘ انہوں نے ساتھیوں کو منع کیا کہ سیاسی نعرے لگانے سے گریز کریں ‘سیاسی نعروںسے فائدہ نہیں نقصان ہوگا‘ کیپٹن سہیل بلوچ نے مزید کہاکہ کمشنر کراچی اور پولیس کو پیر کی صبح اپنی احتجاجی ریلی منسوخ کرنے کا بتادیا تھا‘ ہمیں احتجاج کی وجہ سے مسافروں کو درپیش مشکلات کا احساس ہے‘ انہوں نے کہا کہ ہمیں علم ہے کہ ہمارے احتجاج کی وجہ سے عوام کو تکلیف کا سامنا کرنا پڑا ہے لیکن پی آئی اے کو نجکاری سے بچانے کیلئے ہمارے پاس دوسرا کوئی راستہ نہیں بچا تھا‘ تاہم ہم نے مذاکرات کے دروازے ہمیشہ کھلے رکھے ہیں۔