دہشتگردی کیخلاف آپریشن پنجاب میں بھی ہونا چاہئے، بلاول

February 10, 2016 5:20 pm0 commentsViews: 11

آپریشن سیاست سے پاک ہونا چاہئے، دہشتگردی اور انتہا پسندی کیخلاف مضبوط موقف رکھنے والی سیاسی جماعتوں کو تحفظات ہیں
نیشنل ایکشن پلان پر تمام جماعتوں کا اتفاق ہے، کراچی آپریشن سے لیاری گینگ وار کا خاتمہ ممکن اور امن قائم ہوا
واشنگٹن( نیوز ایجنسیاں) پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف آپریشن سیاست اور تنازعات سے پا ک ہونا چاہیے، دہشتگردی اورانتہاپسندی کے خلاف مضبوط موقف رکھنے والی سیاسی جماعتوں کو انتقامی کارروائیوں پرتحفظات ہیں۔ نیشنل ایکشن پلان بیشتر حصوں پر اب تک عمل نہیں ہوا۔ اس کے تحت پنجاب میں بھی کارروائیاں ہونی چاہئیں۔ شمالی وزیرستان کے سوا خیبر پختونخوا میں کوئی خاص کارروائی نہیں کی گئی واشنگٹن میں یونائٹڈ انسٹی ٹیوٹ آف پیس تھک ٹینک سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ انسداد دہشت گردی کی آڑ میں سیاسی رہنمائوں کے خلاف مقدمات قائم کرنا غلط اور خطرناک ہے اس سے موجودہ حکومت کی قانونی حیثیت مجروح ہورہی ہے۔ حکومت مخالفین کوسیاسی انتقام کانشانہ بنارہی ہے نیشنل ایکشن پلان پرتمام جماعتوں کااتفاق ہے تاہم نیشنل ایکشن پلان کے بیشترحصوں پر اب تک عمل نہیں ہواہے۔انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب میں بھی کارروائیاں ہونی چاہیے۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ ملک کے سب سے بڑے صوبے بلوچستان میں سیاسی مفاہمت کی ضرورت ہے۔ کراچی آپریشن ہم نے شروع کیاجس سے جرائم میں کمی ہوئی اور اسی آپریشن کے نتیجے میں لیاری سے گینگ وار کا خاتمہ ممکن اور امن قائم ہوا۔